مظہر برلاس کا خصوصی تبصرہ

لاہور (ویب ڈیسک) نامور کالم نگار مظہر برلاس اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔دوستو! جان خدا کو دینی ہے، خدا کی امانت ہے مگر یہ لمحۂ فکریہ ہے، حالات کا ماتم ہے کہ ہمارے اہلِ اقتدار، ہمارا حکمران طبقہ احساسِ ذمہ داری سے غافل ہے، ہمارے اہلِ سیاست اقتدار کے کھیل

میں احساس کھو چکے ہیں، اُنہیں شاید خوفِ خدا سے زیادہ اقتدار کی فکر ہے۔ پچھلے پانچ دنوں سے منفی سات درجہ میں کھلے آسمان تلے احتجاج کرنے والے آپ کے ملک کے شہری ہیں، پھولوں جیسے بچے، بزرگ، خواتین اور جذبات سے بھرے نوجوان، سرد موسم میں میتیں رکھے آپ سے کچھ بھی تو نہیں مانگ رہے، صرف یہ کہہ رہے ہیں کہ وزیراعظم آ جائیں۔ چھ بہنوں کے گھر میں جنازہ اٹھانے والا کوئی مرد نہیں، کسی کے سب بھائی چلے گئے، کسی کے سب بیٹے شہید ہو گئے، کوئٹہ کی سوگوار فضا پوچھ رہی ہے کہاں ہیں آپ جناب وزیراعظم؟ میرے چیف جسٹس آپ کہاں ہیں؟ میرے سپہ سالار آپ کہاں ہیں؟ کہاں ہیں آپ سب، کہاں ہیں؟ آج آپ سے سوال ہو رہا ہے آپ کہاں ہیں، کل یومِ حساب آپ سے پوچھا جائے گا کہاں تھے آپ، سب کہاں تھے؟ ابھی ایک سیمینار سے واپس آیا ہوں، وہاں جذباتی ماحول تھا، مجھے ایم ڈبلیو ایم کے سربراہ راجہ ناصر عباس کے جملے بار بار یاد آ رہے ہیں کہ ’’کیا ہم بےدردوں کے وطن میں رہتے ہیں؟‘‘ یہ سوال بھی سب کے لئے ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں