اسلام کا بول بالا : مشہور کِک باکسر اوردی لیڈی ٹائیسن کا خطاب پانے والی خاتون نے اسلام قبول کر لیا

لاہور (ویب ڈیسک)ہالینڈکی باکسنگ سٹار نے اسلام قبول کر لیا۔ تفصیلات کے مطابق ہالینڈ کی باکسنگ سٹار روبی جیسہا میسو نے عیسائی خاندان میں آنکھ کھولی انہوں نے کچھ سال قبل دین اسلام کا مطالعہ شروع کیا اور ان پر عمل پیرا ہونا شرو ع ہو گئیں، اسلامی تعلیمات کے اثر نے انہیں اسلام قبول کرنے

کیلئے آمادہ کیا۔ انہوں نے ہالینڈ کی ایک مسجد میں گواہوں کی موجودگی میں کلمہ شہادت پڑھ کر اسلام قبول کیا۔ باکسنگ سٹار کو دین اسلام قبول کرنے کے بعد مسلمانوں کی جانب سے مبارکباد کے پیغام موصول رہے ہیں، روبی کو کِک باکسر اوردی لیڈی ٹائیسن“ بھی کہا جاتا ہے۔ان کی حجاب میں کچھ تصاویر وائرل ہو رہی ہیں اورمسلم کمیونٹی کی جانب سے انہیں مبارکباد کیساتھ ساتھ سراہا جارہا ہے۔ دوسری جانب اس سے قبل مشہور جرمن باکسر ول ہیلیم اوٹ نے اسلام قبول کیا تھا۔ مشہور جرمن باکسر ول ہیلیم اوٹ نے لاک ڈاؤن کے دوران اسلام قبول کرنے کا اعلان کیاتھا۔مارشل آرٹس میں یورپین چیمپیئن شپ کا ٹائٹل جیتنے والے جرمن باکسر نے اسلام قبول کرنے کے اعلان کے موقع پر اپنے ایک ویڈیو پیغام میں کہا تھا کہ کورونا وائرس کے باعث ہونے والے لاک ڈاؤن نے مجھے اس مذہب کو جاننے کا موقع دیا جس کے بعد میں نے اسلام قبول کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ویڈیو میں جرمن باکسر نے کلمہ طیبہ بھی پڑھا اور اللہ اکبر کا نعرہ بھی لگایا۔سوشل میڈیا پر جرمن باکسر کو اسلام قبول کرنے پر مبارکباد دی جا رہی ہے اور دعائیں بھی دی جا رہی ہیں کہ وہ دین اسلام کو اپنے لوگوں میں پھیلانے کا سبب بنیں گے۔‎دوسری جانب ایک اور خبر کے مطابق یوزی لینڈ میں پولیس کے لیے مخصوص یونیفارم میں تبدیلی کرتے ہوئے خواتین اہلکاروں کے لیے حجاب کا اضافہ کردیا گیا۔عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق نیوزی لینڈ میں پہلی بار پولیس خواتین کے یونیفارم میں حجاب کا اضافہ کیا گیا ہے اور سب سے پہلی مسلم خاتون زینا علی نے حجاب والا یونیفارم زیب تن کیا۔نیوزی لینڈ کے پولیس یونیفارم میں حجاب کو شامل کرنے کا مطالبہ اسٹاف کی جانب سے 2018 میں کیا گیا تھا جس کو منظور کرلیا گیا ہے اور حال ہی بھرتی ہونے والی زینا علی نے سب سے پہلے حجاب والا یونیفارم پہنا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں