روزانہ انڈہ کھانے کا سنگین نقصان تازہ تحقیق میں سامنے آگیا، سائنسدانوں نے پریشان کن دعویٰ کردیا

کنبرا(ویب ڈیسک) انڈہ بہترین غذا قرار دیا جاتا ہے اور ماہرین روزانہ ایک انڈہ کھانے کی تلقین بھی کرتے ہیں لیکن اب آسٹریلوی سائنسدانوں نے نئی تحقیق میں روزانہ انڈہ کھانے کا ایک ایسا نقصان بتا دیا ہے کہ انڈہ کھانے کے شوقین افراد سن کر پریشان ہو جائیں گے۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں نے اپنی اس تحقیق کے نتائج میں بتایا ہے

کہ باقاعدگی سے انڈہ کھانا دوسری قسم کی شوگر کا باعث بنتا ہے۔ جو لوگ طویل عرصے تک روزانہ ایک انڈہ کھاتے ہیں ان کو دوسری قسم کی شوگر لاحق ہونے کا خطرہ 60فیصد تک بڑھ جاتا ہے۔رپورٹ کے مطابق اس تحقیق میں یونیورسٹی آف ساﺅتھ آسٹریلیا کے سائنسدانوں نے 8ہزار 545چینی شہریوں کی غذائی عادات اور طبی ڈیٹا کا تجزیہ کیا۔ یہ ڈیٹا 1991ءسے2009ءکے درمیان ہیلتھ سروے پروگرام کے تحت اکٹھا کیا جاتا رہا تھا جس کی فنڈنگ امریکی ادارہ برائے انسداد امراض نے کی تھی۔ اس ڈیٹا کے تجزیہ سے ایک طرف سے یہ انکشاف ہوا کہ 1991ءسے 2009ءتک چینی شہریوں کے انڈہ کھانے کی شرح میں تین گنا اضافہ ہوا ہے اور دوسری طرف اس تجزئیے میں انڈے اور دوسری قسم کی شوگر کے درمیان تعلق سامنے آیا۔ تحقیق میں شامل جو لوگ روزانہ 38گرام انڈہ کھات تھے ان کو دوسری قسم کی ذیابیطس لاحق ہونے کا کا خطرہ 25فیصد زیادہ تھا جبکہ جو لوگ 50گرام (تقریباً ایک انڈہ) روزانہ کھاتے تھے ان میں اس خطرے کی شرح 60فیصد پائی گئی۔تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر منگ لی کا کہنا تھا کہ ”ہماری اس تحقیق میں انڈے اور شوگر کے درمیان محض ایک تعلق سامنے آیا ہے۔ انڈہ کس طرح شوگر کا باعث بنتا ہے؟ اس سوال کا حتمی جواب جاننے کے لیے مزید تحقیق کی ضرورت ہے۔“ یہاں یہ امرقابل ذکر ہے کہ اس سے قبل کئی تحقیقات میں یہ بھی بتایا جا چکا ہے کہ انڈہ کھانے سے انسان کو شوگر لاحق ہونے کا خطرہ کم ہوتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں