دورانِ پرواز مسافر جہاز کے کاک پٹ کی کھڑکی ٹوٹ گئی تو کپتان کو بھی ہوا باہر لے گئی، پھر جان کیسے بچی؟ ناقابل یقین واقعہ

لندن(ویب ڈیسک)ہوائی جہازوں کے درپیش آنے والے واقعات کے بارے میں ہم سنتے رہتے ہیں جو قابل افسوس تو ہوتے ہیں مگر قابل حیرت نہیں، مگر ماضی میں ایک پرواز کو ایسا بھی حادثہ پیش آ چکا ہے کہ جس پر آج بھی یقین کرنا مشکل نظر آتا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق یہ حادثہ برٹش ایئرویز کی ایک پرواز کو 10جون 1990ءکو پیش آیا تھا،

یہ پرواز برطانوی شہر برمنگھم سے سپین کے شہر مالیگا جا رہی تھی۔ جب ہوائی جہاز برطانیہ کے علاقے آکسفورڈ شائر کے اوپر 17ہزار 300فٹ کی بلندی پر پرواز کر رہا تھا تب کاک پٹ کی کھڑکی کا شیشہ ٹوٹ گیا اور تیز ہوا جہاز کے پائلٹ کو ہی باہر کھینچ لے گئی۔ اس کے باوجود نہ صرف پائلٹ محفوظ رہا بلکہ پرواز بھی محفوظ رہی۔رپورٹ کے مطابق ہوا کچھ یوں تھا کہ جب کھڑکی کا شیشہ ٹوٹا تو عملے کا ایک رکن اس وقت کاک پٹ میں موجود تھا جس نے پائلٹ کی پینٹ کے بیلٹ سے اسے پکڑ لیا اور تادیر اسے تھامے رکھنے میں کامیاب رہا۔ یہ جدوجہد 22منٹ تک جاری رہی جس میں جہاز کے عملے کے اراکین پائلٹ کو واپس کیبن میں کھینچنے اور جہاز کو کریش ہونے سے بچانے کی کوشش کرتے رہے اور بالآخر اس میں کامیاب ہو گئے۔ اس پائلٹ کا نام ٹم لنکیسٹر ہے جو اب بھی زندہ ہے۔ جب اسے عملے کے لوگ واپس کیبن میں کھینچنے میں کامیاب ہو گئے تو اس نے ہوائی جہاز کو بحفاظت ساﺅتھ ہیمپٹن کے ایک ایئرپورٹ اتار دیا۔ اس جدوجہد میں ٹم لنکیسٹر کو کافی زخم بھی آئے۔ جہاز کی لینڈنگ کے بعد اسے فوری طور پر ہسپتال پہنچایا گیا۔ ٹم لنکیسٹر کا کہنا ہے کہ ”آج بھی اس واقعے کو یاد کرکے میرے رونگٹے کھڑے ہو جاتے ہیں۔ اس واقعے میں میرا زندہ بچ جانا ایک معجزہ تھا۔ میں آج بھی جب کسی کو یہ کہانی سناتا ہوں تو وہ اس پر یقین کرنے کو تیار نہیں ہوتا۔“

اپنا تبصرہ بھیجیں