اتنی دیر کیوں ۔۔۔؟ نو منتخب امریکی صدر جو بائیڈن اپنے عہدے کا حلف کب اٹھائیں گے ؟ جان کر آپ یقین نہیں کریں گے

واشنگٹن (ویب ڈیسک) بالآخر ڈیموکریٹک پارٹی کے صدارتی امیدوار سابق نائب صدر جوبائیڈن کیلئے وائٹ ہاؤس کے دروازے کھل گئے اور ان کے امریکہ کے 46ویں صدر بننے کا اعلان ہوگیا۔ جوبائیڈن 20 جنوری 2021 کو صدارت کا حلف اٹھائیں گے ۔ ریاست پنسلوینیا اور نیواڈا کے پاپولر ووٹر زمیں اکثریت کنفرم ہونے کے بعد

قانون کے مطابق ان ریاستوں کیلئے مخصوص بالترتیب تمام 20 اور 6 الیکٹورل ووٹ مل گئے اور ان کا سکور 290 بن گیا۔ 50 ریاستوں اور ڈی سی پر مشتمل الیٹکورل کالج کے کل مندوبین کی تعداد 538 ہے اور صدر بننے کیلئے سادہ اکثریت سے زائد یعنی کم از کم 270 ووٹ درکار تھے۔ جوبائیڈن کے الیکٹورل ووٹ 290تک پہنچ چکے ہیں جو اب درکار ووٹوں سے 20 ووٹ بڑھ گئے ہیں۔ جارجیا کی ریاست کے الیکٹورل ووٹ 16ہیں۔ وہاں بھی جوبائیڈن کو معمولی اکثریت حاصل ہے وہاں اکثریت فائنل ہونے کے بعد یہ ووٹ ملنے سے جوبائیڈن کا کل الیکٹورل سکور306 ہوسکتا ہے صدر ٹرمپ کا سکور بدستور 214 ہے۔ غیرحاضر ووٹ بھی اس سے پہلے کسی الیکشن میں اتنی تعداد میں نہیں ڈالے گئے۔ ایک طویل عرصے کے بعد وائٹ ہاؤس میں موجود صدر کی دوبارہ جیت نہیں ہوسکی۔ ان کے ساتھ منتخب ہونے والی نائب صدر کملا ہیرس پہلی خاتون ہوں گی جو اس عہدے پر فائز ہوں گی۔ 56سالہکملا ہیرس پہلی رنگراز نسل سے تعلق رکھنے والی نائب صدر بنیں گی۔ ان کے والد پروفیسر ڈونلڈ ہیرس افریقی امریکن تھے جنہوں نے ان کی انڈین ماں کو اس وقت طلاق دے دی تھی جب وہ صرف سات برس کی تھی۔ ان کی والدہ کا تعلق انڈیا کی ریاست تامل ناڈو سے تھ جو 1958ء میں امریکہ آکر آباد ہوئیں۔ جنہوں نے بعد میں ڈاکٹری کی تعلیم مکمل کی۔ صدرٹرمپ نے ورجینا میں اپنے گولف کورس سے اپنے پیغام میں شکست تسلیم کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا ہے کہ انتخابات اپنی تکمیل سے ابھی بہت دور ہیں ان نتائج کو چیلنج کیا جائے گا جن کے فیصلیکے بعد حقیقی فاتح کون ہے پتہ چلے گا۔امریکا کے نو منتخب صدر جوبائیڈن نے اپنی کامیابی پر امریکی عوام کا شکریہ ادا کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں