یہ ہوئی نہ بات ۔۔ ۔جھوٹی خبر دینے والے رپورٹر کو دو سال قید کی سزا سنا دی گئی

لاہور(ویب ڈیسک) ابوظہبی کی فیڈرل اپیلٹ کورٹ نے کورونا وائرس کے حوالے سے غلط خبر نشر کرنے والے مقامی ٹی وی چینل کے رپورٹر اور ایک غیر ملکی شہری کے خلاف دو برس کی قید کی سزا کے فیصلے کے توثیق کردی ہے ۔ عرب اخبار کے مطابق متحدہ عرب امارات کے مقامی ٹی وی کے ایک رپورٹر نے کورونا وائرس سے ایک ہی خاندان

کے پانچ افراد کی ہلاکت کی خبر نشر کی تھی جس کی معاونت عرب ملک کے ایک غیرملکی شہری نے بھی کی تھی ۔ مقامی انتظامیہ کا کہناہے کہ غلط خبر سے معاشرے میں خوف کی فضاء قائم ہوتی ہے ۔ خبر نشر ہونے کے بعد اس کی تردید وزارت صحت کی جانب سے بھی کی گئی تھی تاہم اس حوالے سے مقامی ٹی وی چینل کے رپورٹر اور غیر ملکی شہری کے خلاف مقدمہ بھی قائم کیا گیا تھا۔ ابتدائی عدالت نے غلط خبر پر دونوں کو دو برس قید کی سز اکے ساتھ غیر ملکی کے لیے ملک بدری کے احکامات جاری کیے تھے ۔ تاہم ملزمان نے ابتدائی عدالتی فیصلے کے خلاف اپیل دائر کی تھی جس میں فیڈرل اپیل کورٹ نے حالات اور شواہد کا جائزہ لیتے ہوئے سابقہ عدالت کے فیصلے کو برقرار رکھتے وہئے سزا کی توثیق کر دی ہے ۔ کے پانچ افراد کی ہلاکت کی خبر نشر کی تھی جس کی معاونت عرب ملک کے ایک غیرملکی شہری نے بھی کی تھی ۔ مقامی انتظامیہ کا کہناہے کہ غلط خبر سے معاشرے میں خوف کی فضاء قائم ہوتی ہے ۔ خبر نشر ہونے کے بعد اس کی تردید وزارت صحت کی جانب سے بھی کی گئی تھی تاہم اس حوالے سے مقامی ٹی وی چینل کے رپورٹر اور غیر ملکی شہری کے خلاف مقدمہ بھی قائم کیا گیا تھا۔ ابتدائی عدالت نے غلط خبر پر دونوں کو دو برس قید کی سز اکے ساتھ غیر ملکی کے لیے ملک بدری کے احکامات جاری کیے تھے ۔ تاہم ملزمان نے ابتدائی عدالتی فیصلے کے خلاف اپیل دائر کی تھی جس میں فیڈرل اپیل کورٹ نے حالات اور شواہد کا جائزہ لیتے ہوئے سابقہ عدالت کے فیصلے کو برقرار رکھتے وہئے سزا کی توثیق کر دی ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں