کروڑوں کی ٹی ٹیاں۔۔!! کتنی بڑی رقم ،کہاں ، کیسے اور کس نے منتقل کروائی ؟ شہباز شریف خاندان کیخلاف وعدہ معاف گواہ بننےوالے یاسر مشتاق کے تہلکہ خیز انکشافات‎

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سربراہ شہباز شریف خاندان کے خلاف وعدہ معاف گواہ بننے والے یاسر مشتاق کا بیان ریکارڈ ہو گیا۔

نجی ٹی وی رپورٹ کے مطابق شہباز شریف خاندان کے خلاف منی لانڈرنگ ریفرنس میں وعدہ معاف گواہ یاسر مشتاق نے عدالت میں اپنا جواب جمع کرادیا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ2014 میں شریف خاندان کے چیف فنانشل آفیسر (سی ایف او) محمد عثمان نے شہباز شریف کے بیٹے سلیمان شہباز کے 60 کروڑ روپے وائٹ کرانے کے لیے رابطہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ پرانے کاروباری تعلقات کی وجہ سےہم نے کمپنی کا اکاؤنٹ استعمال کرنے کی اجازت دے دی اور 2014 میں بیرون ملک سے 21 کروڑ سے زائد رقم کمپنی اکاؤنٹ میں آئی۔

یاسر مشتاق کے مطابق سرکلر روڈ پر ایک بینک میں اکاؤنٹ کھلوایا گیا جس میں 29 کروڑ روپے سے زائد کی ٹیلی گرافگ ٹرانزیکشن (ٹی ٹی) لگوائی گئی۔

ان کا مزید کہنا ہے کہ سلیمان شہباز نے اپنے ملازم طاہر نقوی کے نام پر وقار ٹریڈنگ کمپنی بنائی اور اس اکاؤنٹ سے 10کروڑ روپے مشتاق اینڈ کمپنی کے نام چیک کے ذریعے ٹرانسفر کیے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ رقم کو قانونی رنگ دینے کے لیے سلیمان شہباز نے دو فرضی معاہدے کیے جن کے مطابق ہم نے سلیمان شہباز کو 30 کروڑ روپے قرض دیا۔

خیال رہے کہ قومی احتساب بیورو (نیب) نے مسلم لیگ (ن) کے صدر و قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے و پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز سمیت 16 ملزمان کے خلاف احتساب عدالت میں منی لانڈرنگ کا ریفرنس دائر کررکھا ہے۔

اس کیس میں شہباز شریف گرفتار ہیں اور جوڈیشل ریمانڈ پر جیل میں ہیں جبکہ عدالت نے اس کیس میں ملزمان پر فرد جرم عائد کرنے کیلئے 11 نومبر کی تاریخ مقرر کررکھی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں