جوبائیڈن کے امریکی صدر بننے کے امکانات بڑھ گئےلیکن ان کی اہلیہ جل بائیڈن دراصل کون ہیں اور کیا کرتی ہیں؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ کے صدارتی انتخابات میں صدر ٹرمپ کے حریف جوبائیڈن کے آئندہ صدر بننے کے امکانات بڑھ گئے ہیں۔ انہوں نے ریاست جارجیا میں صدر ٹرمپ کو917ووٹوں سے شکست دے ڈالی ہے

اوراب انہیں صدر بننے کے لیے ایریزونا اور نیواڈا میں سے کسی ایک ریاست میں فتح حاصل کرنے کی ضرورت ہے۔ جوبائیڈن کے صدر بننے کی صورت میں ان کی 69سالہ اہلیہ ڈاکٹر جل بائیڈن امریکہ کی نئی خاتون اول قرار پائیں گی جو پیشے کے اعتبار سے ٹیچر ہیں اورکالج میں انگریزی پڑھاتی ہیں۔ ان کی خواہش ہے کہ وہ خاتون اول بننے کے بعد بھی اس پیشے سے منسلک رہنا چاہتی ہیں۔ میل آن لائن کے مطابق جوبائیڈن اور جل بائیڈن کی شادی کی 43سالہ کا عرصہ گزر چکا ہے۔ جل بائیڈن نے ازدواجی زندگی اور پیشہ وارانہ زندگی کو ہمیشہ متوازن رکھا اور اپنے دو سوتیلے بچوں کی بھی بہترین پرورش کی۔ جوبائیڈن کے بیٹے بائیو اور ہنٹر بائیڈن ان کی پہلی اہلیہ سے ہیں جو 1972ءمیں ایک کار حادثے میں موت کے منہ میں چلی گئی تھیں۔ اس حادثے میں ان بچوں کی دیکھ بھال کرنے والی آیا کی بھی موت ہو گئی تھی۔ اس کے بعد ان کی ذمہ داری ڈاکٹر جل بائیڈن نے سوتیلی ماں کی حیثیت سے اٹھائی اور احسن طریقے سے نبھائی۔ رپورٹ کے مطابق تاحال یہ واضح نہیں ہے کہ وہ خاتون اول بننے کے بعد کیا کریں گے تاہم یہ بات واضح ہے کہ وہ موجودہ خاتون اول میلانیا ٹرمپ کے یکسر برعکس ہوں گی اور پریزیڈنسی میں ان کی دلچسپی میلانیا کے برعکس بہت زیادہ ہو گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں