’’ وزیر اعظم عمران خان نے فردوس عاشق اعوان کو بنی گالہ بُلایا اور۔۔۔‘‘ خاتون اول کے کہنے پر عمران خان نے کیا فیصلہ کر لیا؟ ارشاد بھٹی نے ناقابلِ یقین انکشاف کر دیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) سینئر صحافی ارشاد بھٹی کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان اور فردوس عاشق اعوان کے مابین بنی گالا میں ملاقات ہوئی تھی،اس ملاقات کو سب سے خفیہ رکھا گیا تھا۔عمران خان نے کسی کو بتائے بغیر فروس عاشق کو بنی گالا بلایا۔دونوں کے درمیان طویل نشست ہوئی جس میں طے پایا کہ فروس

عاشق اعوان پنجاب میں کام کریں گی، ارشاد بھٹی نے مزید کہا کہ فردوس عاشق اعوان بنی گالا ہاؤس کی وجہ سے آئی ہیں یہاں پر صحافی کا اشارہ خاتون اول کی جانب ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ یہ تبدیلی سرکار ہے، بار بار ترجمانوں اور وزاء کو تبدیل کیا جا رہا ہے، یہی اصل تبدیلی ہے۔فیاض الحسن چوہان نے کیا نہیں کیا جو فردوس عاشق اعوان کریں گی۔فیاض الحسن چوہان ہر محاذ پر لڑے ہیں اب ان کو تبدیل کیوں کیا اس کا صرف عمران خان اور بنی گالا ہاؤس کو پتہ ہے۔شہباز گل کو پنجاب سے نکال کر وفاق بھیجا گیا جب کہ فردوس عاشق کو وفاق سے پنجاب میں لایا گیا ہے۔ارشاد بھٹی نے مزید کہا کہ ن لیگ میں چونکہ مریم نواز اور مریم اورنگزیب دونوں خواتین ہیں لہذا ان سے مقابلے کے لیے فردوس عاشق اعوان کو لایا گیا ہے۔بتایا جا رہا ہے کہ ہوائی فائرنگ زیادہ ہو گئی تھی، اب سیدھی سیدھی فائرنگ کی ضرورت تھی اور ڈاکٹر صاحبہ کا نشانہ پکا ہے۔واضح رہے کہ ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کو معاون خصوصی برائے اطلاعات پنجاب مقرر کردیا گیا ، فردوس عاشق اعوان پہلے وفاق میں بھی معاون خصوصی برائے اطلاعات رہ چکی ہیں، فردوس عاشق اعوان کو پنجاب میں سیاسی صورتحال کو مدنظر رکھ کر ذمہ داری دی گئی ، ذرائع کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پر کابینہ میں اکھاڑ پچھاڑ کی، جس کے تحت وزیراعظم کی سابق معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان کو پنجاب میں اطلاعات کی اہم ذمہ داری سونپی گئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں