حکومت کے گردشی قرضہ میں کمی کے تمام دعوے ہوا ہوگئے! 3 ماہ میں گردشی قرضوں میں کتنا اضافہ ہوا؟ اعدادوشمار سامنے آگئے

اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) وزیر توانائی عمر ایوب اور حکومت کےکے گردشی قرضہ میں کمی کے تمام دعوے ہوا ہو گئے، تین ماہ میں ایک سو سولہ ارب روپے گردشی قرضہ بڑھ گیا۔ سیکرٹری توانائی کے مطابق مالی سال 2019 کی پہلی ششماہی میں گردشی قرضہ میں 288 ارب کا اضافہ ہوا،مالی سال 2019 کی دوسری ششماہی میں

گردشی قرضہ میں 198 ارب روپے کا اضافہ ہوا،مالی سال 2020 کی پہلی ششماہی میں 243 ارب روپے کا اضافہ ہوا، سیکرٹری توانائی کے مطابق مالی سال 2020 کی دوسری ششماہی میں 294 ارب گردشی قرضہ بڑھا، چیئر مین پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے مطابق موجودہ حکومت نے 5 دفعہ بجلی قیمتوں میں اضافہ کیا، توانائی شعبے کا گردشی قرضہ بے لگام، 2 ہزار تین سو ارب روپے تک پہنچ گیا،موجودہ دور حکومت میں گردشی قرضہ میں 1 ہزار 139 ارب روپے اضافہ ہوا۔دوسری جانب جیکب آباد میں مہنگائی نے عوام کی چیخیں نکال دیں،مٹر 500روپے ٹماٹر 200روپے کلو فروخت کئے جانے لگے تفصیلات کے مطابق جیکب آباد میں مہنگائی نے عوام کی چیخیں نکال دی ہیں سبزی فروٹ اور دیگر اشیاءخورونوش کے نرخ آسمان کو جا پہنچے ہیں جس کے باعث غریب اور متوسط طبقے کی قوت خرید جواب دے گئی ہے ملنے والی معلومات کے تحت مٹر 500روپے،ٹماٹر 200روپے کلو فروخت کئے جا رہے ہیں پرائز کنٹرو ل کمیٹیوں کی غیر فعال ہونے کی وجہ سے سبزی اور پھل فروشوں نے لوٹ مار کا بازار گرم کر رکھا ہےدیگر اشیاء خوردونوش جس میں آٹا،دالیں بھی مہنگے داموں فروخت کی جا رہی ہیں آٹا بھی مارکیٹ میں سرکاری ریٹ پر نہیں دیا جا رہا شہریوں نے ڈی سی سے مطالبہ کیا ہے کہ مہنگائی کو کنٹرول کرنے کے لئے پرائیز کنٹرول کمیٹیوں کو فعال کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں