صدقے تمہاری غیرت کے : جب اے ڈی خواجہ کو زبردستی 15 دن کی رخصت پر بھیجا گیا تب آپ کہاں تھے ، تب کیوں استعفے نہیں دیے ۔۔۔۔؟ ارشاد بھٹی کا سندھ پولیس سے چبھتا ہوا سوال

لاہور (ویب ڈیسک) مزار کس کا تھا،محمد علی جناح ؒ کا، ہم انہیں کیا کہتے ہیں، قائداعظمؒ، ہم انہیں کیا سمجھتے ہیں، بابائے قوم، مطلب سب سے بڑے رہنما اور قوم کے باپ کی قبرپرجوتوں سمیت دھاوا، بدتمیزی، بدتہذیبی، نعر ے اور نعروں کی آڑ میں تضحیک آمیز نعرے،شاباش، ہماری غیرت اِس پر

نامور کالم نگار ارشاد بھٹی اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔نہ جاگی کہ مزارِ قائد پر کیا ہوا، ہماری غیرت اِس پر نہ جاگی کہ مرنے کے بعد بھی قائداعظم، قوم کا باپ جیرے بلیڈوں سے محفوظ نہیں، ہماری غیرت اِس پر جاگی کہ آئی جی سے زبردستی ایف آئی آر کٹوائی گئی۔شاباش، کوئی ہوٹل کے ٹوٹے دروازے میں پھنسا ہوا، کوئی آئی جی سے ہوئی زبردستیوں میں مغز ماری کررہا، کسی کو پروا نہیں کہ قائداعظم کے ساتھ کیا ہوچکا، اِس سانحے پر اعتزاز احسن کا ردِعمل سن لیں، مستنصر حسین تارڑ کا خط پڑھ لیں، کتنے دکھ کی بات، مریم نواز، کیپٹن صفد رکے ساتھ پوری اپوزیشن، سندھ پولیس کے ساتھ سندھ حکومت، ابھی تین چاردن پہلے سینیٹ میں علامہ اقبال کے پوتے سینیٹر ولید اقبال کو کہتے سنا ’’اگر کوئی ایسی حرکت علامہ اقبال کے مزار پر کرے تو میں اس کا گریبان پھاڑ دوں‘‘۔ مطلب سب وارثوں والے، بس لاوارث قائداعظم، سب کا کوئی نہ کوئی، اگر کسی کا کوئی نہیں تو وہ بابائے قوم کا۔ویسے تو مریم نواز سندھ پولیس کو شاباش دے چکیں، لیکن ایک شاباش سندھ پولیس کو میری طرف سے بھی، کیوں؟ اس لئےکہ جب سندھ حکومت ان کے آئی جی اے ڈی خواجہ کو کام نہیں کرنے دے رہی تھی، جب اے ڈی خواجہ کو زبردستی 15دن چھٹیوں پر بھیج دیا گیا، تب سندھ پولیس چھٹیوں پر نہ گئی، ان کے آئی جی کلیم امام کے ساتھ کیا کیا نہ ہوا، سندھ پولیس چھٹیوں پر نہ گئی، عزیر بلوچ اپنی مرضی سے پولیس تقرریاں کرواتا، بھتے لیتا، قبضے کرتا، پولیس گاڑیوں میں وارداتیں ڈالتارہا، سندھ پولیس چھٹیوں پر نہ گئی۔

اومنی گروپ خدمتیں ہوں، زرداری صاحب کی شوگر ملوں تک گنا پہنچانا ہو، سندھ پولیس چھٹیوں پر نہ گئی، گٹکے کا کاروبار ہو یاایرانی تیل دھندا، پٹرول پمپ کہانیاں ہوں یا بڑے گھروں کی منتھلیاں، سندھ پولیس چھٹیوں پر نہ گئی، باقی چھوڑیں، آئی جی مشتاق مہر جب سی سی پی اوکراچی تھے تب انہوں نے اومنی گروپ کیلئے کیا کیا اور سپریم کورٹ نے کیا کہامگر سندھ پولیس چھٹیوں پر نہ گئی، سندھ پولیس چھٹیوں پر کب گئی جب اس سے قائداعظم توہین پر زبردستی ایف آئی آر کٹوائی گئی، شاباش تو بنتی ہے ۔یہاں نعرہ بازوں سے پوچھنا، کیا وہ ایوب خان کی قبر تھی، جہاں آپ ووٹ کو عزت دو کے نعرے مار رہے تھے، کیا وہ ضیاء الحق کی قبر تھی جہاں آپ ووٹ کی حرمت پر اپنی دیوانگی نچھاور کررہے تھے۔کیاوہ پرویز مشرف کے گھر کا دروازہ تھا کہ جہاں پہنچ کر آپ ہوش وہواس کھو بیٹھے، مجھے معلوم نعرے باز ایوب خان کی قبر پر نعرے نہیں مار سکتے کیونکہ ایوب کی پیداوار کے تو وہ مہمان تھے، مجھے معلوم وہ ضیاء الحق کی قبر پر نعرے نہیں مار سکتے تھے کیونکہ ضیا ء الحق کی پیداوار تو وہ خود، مجھے معلوم وہ پرویز مشرف کے گھر کے باہر نعرے نہیں مار سکتے کیونکہ مشرف صاحب سے تو ڈیلیں فرمائی ہوئیں۔ہاں البتہ نعرے باز یہ ضرور کر سکتے ہیں کہ لندن جائیں، ایون فیلڈ فلیٹس کے سامنے کھڑے ہو کر نعرے ماریں، کورٹ کو عزت نہیں دینی، نہ دیں مگر ووٹ کو عزت دیں اور واپس آئیں لیکن اتنی سی گزارش کہ ایون فیلڈ کے سامنے نعرے ذرا آہستہ، کہیں لندن پولیس چھٹیوں پر نہ چلی جائے۔