(ن)لیگ کا ٹوپی ڈرامہ بے نقاب ۔۔۔!!! کیپٹن (ر)صفدرکو رینجرز نے نہیں بلکہ کس نے گرفتار کیا ؟ سی سی ٹی وی فوٹیج دیکھ کر ہر کوئی حیران پریشان

اسلام آباد(ویب ڈیسک)معاون خصوصی ڈاکٹر شہبازگل نے کہا ہے فوٹیج سے واضح ہوگیا ہے کیپٹن (ر)صفدر کوسندھ پولیس نے گرفتار کیا۔ فوٹیج میں نظر آرہا ہے کہ کسی نے کوئی زبردستی نہیں کی،نہ دروازہ توڑا۔نجی ٹی وی اے آئی وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر شہبازگل نے کہا ہے کہ مزار قائد پر نعرے لگ رہے تھے

تو مریم بی بی مسکرا رہی تھیں۔ان کا کہنا تھا کہ فوٹیج میں صاف نظر آ رہا ہے کسی نے دروازہ نہیں توڑااور نہ کسی نے زبردستی کی ہے۔ فوٹیج میں واضح دکھائی دے رہا ہے کہ کیپٹن صفدرکو پولیس نے گرفتار کیا ہے، رینجرز کا کوئی بھی اہلکار موجود نہیں ہے،اپوزیشن کا صرف ایک ہی مقصد ہے کہ اداروں پر حملہ کیا جائے۔ انہوںنے کہا کہ مزار قائد پر جو کچھ ہوا وہ سب نے دیکھا، اب یہ لوگ اس معاملے کو کہیں اور لے کر جارہے ہیں ۔شہباز گل نے کہا کہ ن لیگیوں کا چہرہ سامنے آگیا جو اپنے مفاد کے لیے کچھ بھی کرسکتے ہیں۔ تاریخ گواہ ہے یہ لوگ پنجاب پولیس کواپنے مفادات کے لیے استعمال کر تے رہے۔ بینظیر بھٹو کے خلاف بھی ان لوگوں نے مہمات چلائیں، چادر اور چاردیواری کی پامالی ن لیگ کا ہی کلچر ہے، ان لوگوں نے ماڈل ٹاﺅن میں چادر اور چار دیواری کی بدترین پامالی کی اور خواتین اور بچوں پر فائرنگ کرائی۔ کیا اس واقعہ پروزیراعظم نے استعفیٰ دیا تھا۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق سابق وزیراعظم نوازشریف کے داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدرکی گرفتاری کی ویڈیو سامنے آگئی ۔ویڈیو فوٹیج کے مطابق کیپٹن صفدر کی گرفتاری کا آپریشن 46 منٹ جاری رہا، صبح 6 بج کر 8 منٹ پر ہوٹل میں پولیس کی 2 موبائلیں داخل ہوئیں۔فوٹیج کے مطابق 6 بجکر 46 منٹ پر پولیس ٹیم 15 ویں فلور پر مریم نواز کے کمرے کے باہر پہنچ گئی اور مریم نواز کے کمرے کے باہر سیاہ لباس اور جوگرز پہنا شخص فون پرہدایات لیتا رہا جب کہ 6 بجکر 48 منٹ پر اہلکار دروازہ توڑ کر کمرے میں داخل ہوئے اور 6 بجکر 50 منٹ پر کیپٹن صفدر کو کمرے سے باہر نکال کر حراست میں لیا گیا۔ویڈیو فوٹیج کے مطابق لفٹ اور لابی میں سادہ لباس میں ایک شخص کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی ویڈیو بناتا رہا۔