پاکستان میں لوگ بہنوں کو انکا جائز اور شرعی حق کیوں نہیں دیتے ؟ ایک کیس کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ کے اہم ریمارکس ، قوم کا سر شرم سے جھک گیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک)عدالت عظمیٰ کےجسٹس قاضی فائز عیسی ٰنے اراضی حبہ کرنے سے متعلق ایک مقدمہ کی سماعت کے د وران ریمارکس دئیے ہیں کہ پتا نہیں کہ اس ملک میں لوگ شرعی احکامات سے اتنی روگردانی کیوں کرتے ہیں، کوئی بھی شخص شرعی قوانین کے مطابق اپنی بہنوں کو حصہ نہیں

دینا چاہتا،میں نے آج تک نہیں سنا کہ کسی بھائی نے بھی اپنی بہن کو زمین تحفے کے طور پرد ی ہو،بھائی تو خوش ہوتے ہیں کہ ان کو خاندانی جائیداد میں بہنوں کی نسبت دوگنا حصہ مل رہا ہے،جسٹس قاضی فائز عیسی ٰ کی سربراہی میں جسٹس امین الدین خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے تحصیل تلہ گنگ کے گائوں تراپ کی رہائشی اختر النساء کی جانب سے1996 میں 57 کنال خاندانی اراضی اپنے بڑے بھائی عبدالحئی کو تحفے میں دینے سے متعلق کیس میں لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کیخلاف دائر کی گئی اپیل کی سماعت کی

اپنا تبصرہ بھیجیں