اگر ہم یہ ایک چیز پر عمل کرتے تو مارشل لاء نہ لگتا اور نہ ہی ۔۔۔ 12 اکتوبر 1999 جنرل مشرف کے مارشل لاء کی یاد میں نواز شریف کا ہوش اڑا دینے والا اعتراف

لاہور(ویب ڈیسک) پاکستان مسلم لیگ ن کے قائد اور سابق وزیراعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ قائدِ اعظم کی ہدایت پر عمل کیا جاتا توسقوطِ ڈھاکہ اور 12 اکتوبر جیسی بغاوت نہ ہوتی، اسی لیے ہم کہتے ہیں ’’ووٹ کو عزت دو‘‘۔ انہوں نے 12 اکتوبر1999ء کو سابق صدر جنرل (ریٹائرڈ) پرویز مشرف کے مارشل لاء کے غیرآئینی اقدام پر

اپنے ٹویٹ میں کہا کہ 72 برس پہلے سٹاف کالج کوئٹہ میں قائدِ اعظم کی ہدایت پر عمل کیا جاتا تو نہ ہی سقوطِ ڈھاکہ جیسا المناک سانحہ ہوتا۔نہ ہی 12 اکتوبر 1999 جیسی بغاوت ہوتی اور نہ ہی عوام کے منتخب وزیرِ اعظم کو گرفتار کرنے کے لیے پرائم منسٹر ہاؤس فتح کیا جاتا۔ اسی لیے ہم کہتے ہیں ’’ووٹ کو عزت دو‘‘۔ نائب صدر ن لیگ مریم نواز نے کہا کہ 12 اکتوبر 1999 ایک سیاہ دن، ووٹ کی عزت کی پامالی، آئین کی توہین اور جمہوریت کے قتل کا دن، نو سالہ اندھی، گونگی بہری آمریت کے آغاز کا دن۔ ایسے سیاہ دنوں کو مستقبل کی تاریخ سے ہمیشہ کے لئے خارج کرنا نواز شریف کا مشن ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ وہی مشن جس کا واضح اعلان قائداعظم نے 1948 میں کوئٹہ سٹاف کالج میں کہا تھا۔ جس کا مفہوم ہے ’’ووٹ کو عزت دو‘‘اپنے ٹویٹ میں کہا کہ 72 برس پہلے سٹاف کالج کوئٹہ میں قائدِ اعظم کی ہدایت پر عمل کیا جاتا تو نہ ہی سقوطِ ڈھاکہ جیسا المناک سانحہ ہوتا۔نہ ہی 12 اکتوبر 1999 جیسی بغاوت ہوتی اور نہ ہی عوام کے منتخب وزیرِ اعظم کو گرفتار کرنے کے لیے پرائم منسٹر ہاؤس فتح کیا جاتا۔ اسی لیے ہم کہتے ہیں ’’ووٹ کو عزت دو‘‘۔ نائب صدر ن لیگ مریم نواز نے کہا کہ 12 اکتوبر 1999 ایک سیاہ دن، ووٹ کی عزت کی پامالی، آئین کی توہین اور جمہوریت کے قتل کا دن، نو سالہ اندھی، گونگی بہری آمریت کے آغاز کا دن۔ ایسے سیاہ دنوں کو مستقبل کی تاریخ سے ہمیشہ کے لئے خارج کرنا نواز شریف کا مشن ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ وہی مشن جس کا واضح اعلان قائداعظم نے 1948 میں کوئٹہ سٹاف کالج میں کہا تھا۔ جس کا مفہوم ہے ’’ووٹ کو عزت دو‘‘

اپنا تبصرہ بھیجیں