تر کی اور ایران سے قربتیں بڑھاتے بڑھاتے وزیراعظم عمران خان عرب ممالک کو بھول گئے ۔۔۔ سعودی عرب ناراض ،رؤف کلاسرا نے خبر دے دی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) سینیئر صحافی رؤف کلاسرا نے کہا ہے کہ عمران خان فارن پالیسی کو ایسے چلا رہے ہیں جیسے ڈومیسٹک پالیسی چلا رہے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے سینیر صحافی رؤف کلاسرا نے کہا کہ جس طرح عمران خان کی حکومت کی جانب سے سعودی عرب کی پالیسی

کو چلایا گیا ہے، اس سے عرب ممالک کو احساس ہو گیا ہے کہ عمران خان کے ساتھ کام نہیں چل سکتا۔اس وقت تمام خلیجی و عرب ممالک امریکہ کی جانب دیکھ رہے ہیں۔ عمران خان بھی روزویلٹ ہوٹل اسی لیے بیچنا چاہتے تھے کہ ڈونلڈ ٹرمپ اینڈ کمپنی اس میں نٹرسٹ لے رہی ہے اور عمران خان کو بھی یہی لگتا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے الیکشن جیتنے کے بعد ان کی حکومت کو کوئی مسئلہ نہیں ہوگا لیکن سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات بھی امریکہ کی جانب دیکھ رہے ہیں، امریکہ کی ایما پر متحدہ عرب امارات نے اسرائیل کے ساتھ معاہدہ کیا اس کے علاوہ اسرائیل اور متحدہ عرب امارات کے وزرائے خارجہ کی میٹنگ بھی ہوئی۔اسرائیل متحدہ عرب امارات میں ہیروں کی تجارت شروع کررہے ہیں۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ کیا ڈونلڈ ٹرمپ دوبارہ اقتدار میں آکر پاکستان کا ساتھ دیتے ہیں یا سعودی عرب یا متحدہ عرب امارات کے ساتھ کھڑے ہوتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان ترکی اور ایران کی قربت کی پالیسی اپنائے ہوئے عرب بلاک سے دور ہو چکے ہیں جس کے نتائج پاکستان کے لیے خوش آئند نہیں ہوں گے۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق سابق وزیراعظم نوازشریف نے پارٹی کے تمام ارکان قومی اسمبلی، صوبائی اسمبلی،سینیٹرز اور ٹکٹ ہولڈرز کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آپ میں سے کئی ایسے بھی ہیں جو بہت دیر سے سیاست کے میدان میں ہیں اور پاکستان کے عوام کی خدمت کا فریضہ اٹھایا ہواہے ، آپ کے کندھوں پر ذمہ داری ہے ، آپ بھی تو سوچتے ہوں گے کہ پاکستان کے اندر کیا ہوتاہے کہ کبھی یہاں پر ایک نظام ہوتاہے اور پھر اسے ختم کر کے دوسرا نظام آجاتاہے ، اس کے بعد تیسرا آجاتاہے ، یہ پاکستان کا آئین ہے جس کو آپ کئی مرتبہ پڑھ چکے ہوں گے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں