ملی بھگت یا سفارش؟؟ اہم ترین سرکاری ادارے میں گریڈ 11 کے جونیئر کلرکس گریڈ 16 کی سیٹوں پر تعینات، حکومت سوتی رہ گئی

لاہور (ویب ڈیسک) ملی بھگت یا تگڑی سفارشیں، لاہور میں محکمہ ایکسائز میں جونئیر کلرکوں کو انسپکٹر کے عہدے پر تعینات کرنے کا انکشاف ہوا ہے۔ چھتیس جونئیر کلرکوں کو انسپکٹر کے عہدے پر تعینات کر دیا گیا۔ گریڈ گیارہ کے90 سے زائد جونئیر کلرکوں کو انسپکٹر کے عہدوں سے ہٹا دیا۔

محکمہ ایکسائز میں نکا کلچر فروغ پانے لگا، گریڈ 11کے جونئیر کلرکوں کو گریڈ سولہ کی سیٹوں پر تعینات کر دیا گیا۔ صوبہ بھر میں90سے زائد جونیئر کلرکس کی انسپکٹرکے عہدوں پر تعیناتی کا انکشاف ہوا ہے جبکہ لاہور کی 4 ریجنز میں 35جونیئر کلرکس انسپکٹر کے عہدوں پر تعینات کئے تھے۔ جونیئر کلرکس موٹر بر انچز اور پراپرٹی ٹیکس اکٹھا کرنے کیلئے کام کر رہے تھے۔ جونیئر کلرکوں کو آن پے سکیل بنیادوں پر انسپکٹر کے عہدوں پر تعینات تھے۔ آن پے سکیل بنیادوں پر انسپکٹر کے عہدوں پر کام کرنے والوں کو ہٹا دیا گیا ہے۔ سیکرٹری ایکسائز نے معاملہ سامنے آنے پر پنجاب بھر میں ہٹانے کا حکم دیا تھا۔ دوسری طرف درجنوں کانسٹیبلوں کو بھی جونیئر کلرک کے عہدے پرتعینات کیا گیا تھا اب جونیئر کلرک سے واپس کانسٹیبل کے عہدے پر تعینات کر دیا گیا۔ پنجاب بھر سے ڈائریکٹرز نے رپورٹ ڈی جی ایکسائز کو بھجوا دی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں