’’ لڑکی کو نہاتا دیکھ کر لوگ۔۔۔ ‘‘ نواز شریف نے اپنے دور میں ’ شیمپو‘ کے اشتہار پر پابندی کیوں لگوائی گئی؟ ناقابلِ یقین وجہ سامنے آگئی

لاہور (نیوز ڈیسک ) سینئر صحافی عامر متین کا کہنا ہے کہ غداری اب ایک مذاق بن چکا ہے جس کو روکنا چاہئیے،اب اس میں پیمرا کو بھی شامل کیا جا رہا ہے۔پیمرا نے پہلے نواز شریف کی تقریر پر پابندی لگائی۔ساتھ میں ایک اور عجیب چیز سامنے آئی ہے کہ بسکٹ کے اشتہار کو بین کر دیا گیا ہے۔

پیمرا کا کہنا ہے کہ اس میں ف حاشی دکھائی گئی ہے۔میں نے اس اشتہار کو دس بار دیکھا ہے،اگر وہ اشتہار بند ہو سکتا ہے تو پھر 70سالوں میں پاکستان میں جنتی بھی فلمیں اور ڈرامے بنے ہیں وہ بند ہونے چاہئیے۔اگر کسی کو اس کمرشل کے اندر ف حاشی نظر آتی ہے تو اس کا علاج ہونا چاہئیے۔ہمارے ایک میڈیا کے گروپ نے ف ساد پھیلایا ہوا ہے۔اس کے بعد کچھ اشتہارات بھی بند کروائے گئے،ایسے واقعات ماضی میں بھی ہوتے رہے ہیں۔نواز شریف نے ایک زمانے میں شیمپو کے اشتہار پر پابندی لگوائی تھی۔جب انہوں نے صحافیوں کو ناشتے پر مدعو کیا تو ان سے سوال کیا گیا کہ آخر کیا وجہ ہے آپ نے شیمپو پر پابندی لگوا دی۔جس پر نواز شریف نے کہا کہ آپ نہیں سمجھتے، شیمپو میں جب لڑکی کے بال دکھائے جاتے ہیں نہاتے ہوئے تو پھر لوگوں کو گندے خیالات آتے ہیں۔جس پر صحافی محمد مالک نے چٹکلا چھوڑتے ہوئے کہا کہ کہا کہ میاں صاحب اگر ایک شیمپو کے اشتہار میں بال نہیں دکھائے جائیں گے تو پھر آپ کی اور میری ٹنڈ دکھائی جائے گی۔

دوسری جانب پیمرا نے مہوش حیات نئے کمرشل پر پابندی عائد کردی۔ حال ہی میں ایک بسکٹ “گالا” کے لئے بنایا گیا نیا کمرشل نشر کیا گیا جس میں اداکارہ ڈانس کرتے ہوئے نظر آ رہی ہیں جس میں وہ مختصر ملبوسات پہنے ہوئے نظر آ رہی ہیں، جسے ڈیزائنر علی ذیشان نے ڈیزائن کیا ہے۔ پیمرا نے کمرشل پر بابندی لگاتے ہوئے جاری نوٹس میں لکھاکہ ایسے ف حش اشتہارات بنانے سے گریز کیا جائے اور بسکٹ اور دیگر اشیاء کے اسی طرح کے مواد پر منبی کمرشل بنانے کی قطعی اجازت نہیں ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں