ڈیرہ اسماعیل خان میں شجرکاری مہم کے سلسلہ میں کھدائی خزانے تک لے گئی ۔۔۔صدیوں سے دفن کتنا بڑا خزانہ حکومت کے ہاتھ لگ گیا ؟ جان کر آپ کی آنکھیں بھی کھلی کی کھلی رہ جائیں گی

ڈیرہ اسماعیل خان(ویب ڈیسک)ڈیرہ اسماعیل خان کے نواحی علاقہ کوٹلہ لودھیان میں سرکاری سکول سے ملحقہ اراضی میں شجرکاری مہم کے سلسلہ میں کھدائی کے دوران زمانہ قبل مسیح کی بدھا کی مورتیاں اور 1840 کے سکے برآمد ہوگئے ۔ڈپٹی کمشنر ڈیرہ محمد عمیر نے بتایا کہ ضلعی انتظامیہ نے برآمد ہونے والے آثار قدیمہ

سرکاری تحویل میں لے لئے، جلد محکمہ آثار قدیمہ کے ماہرین سے ان کی تصدیق کرائی جائے گی۔ تفصیلات کے مطابق تحصیل پہاڑ پور کے علاقہ کوٹلہ لودھیان میںگورنمنٹ پرائمری سکول کے ہیڈ ٹیچر محمد آصف کی جانب سے سکول سے ملحقہ اراضی میں شجر کاری کے سلسلہ میں کھدائی کے دوران مذکورہ اراضی سے اشوکا کے عہد کے نوادرات جن میں زمانہ قبل مسیح کی بدھا کی مورتیاں، مٹی کے نودرات و قدیم آٹا چکی سمیت 1840 اور 1912 کے سکے شامل ہیں برآمد ہوئے ہیں۔ اس حوالے سے سکول انتظامیہ کی جانب سے پہاڑ پور انتظامیہ کو آگاہ کیا گیا جس پر ڈپٹی کمشنر ڈیرہ محمد عمیر کی ہدایت پر اسسٹنٹ کمشنر پہاڑ پور راﺅ محمد ہاشم عظیم نے برآمد ہونے والے قیمتی نوادرات اور مورتیاں سرکاری تحویل میں لے لی ہیں اور نوادران کی حفاظت کیلئے علاقہ کو سیل کردیا گیا ہے۔ڈپٹی کمشنر ڈیرہ محمد عمیر نے اس حوالے سے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ گورنمنٹ پرائمری سکول کوٹلہ لودھیان سے ملحقہ اراضی سے برآمد ہونے والی نوادرات کی تصدیق اور مزید نوادرات کی موجودگی کے حوالے سے محکمہ آثار قدیمہ پشاور کے ماہرین سے رابطہ کیا گیا ہے اور سلسلے میں جلد محکمہ آثار قدیمہ کے ماہرین کی ٹیم ڈیرہ اسماعیل خان آئے گی۔واضح رہے کہ تحصیل پہاڑ پورمیں بلوٹ شریف اور ملحقہ علاقوں میں قدیم دور کے کئی معروف مقامات موجود ہیں اور علاقہ میں اس حوالے سے آثار قدیمہ کی موجودگی کے قوی امکانات بھی ہیں۔ علاقہ میں اس حوالے سے آثار قدیمہ کی موجودگی کے قوی امکانات بھی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں