بریکنگ نیوز: امریکا کی عالمی نمبرداری خطرے میں !! ٹرمپ کے بیمار پڑتے ہی اہم ترین ملک نے امریکی بحری اڈہ مسمار کر دیا

واشنگٹن (ویب ڈیسک) امریکہ نہیں اب چین سے ہوگی دوستی ، کمبوڈیا نے امریکی بحری اڈہ مسمار کر دیا ۔اطلاعات کے مطابق امریکی حکام کی طرف سے انکشاف کیا گیا ہےکہ کمبوڈیا نے چین کوسمندری رسائی دینےکے لیے کمبوڈیا میں قائم امریکی بحری اڈے کو مسمار کر دیا ہے۔ ذرائع کے مطابق اس حوالے سے ایک امریکی تھنک ٹینک

نے رپورٹ جاری کی ہےجس میں کہا گیا ہے کہ کمبوڈیا نے ملک میں فوجی اڈوں تک چین کو رسائی دینے کےلیے کمبوڈیا میں امریکی سرمائے سے تعمیر ملک کے سب سے بڑے بحری اڈے کومسمارکردیا ہے۔ امریکی سینٹر برائے اسٹریٹجک اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز (CSIS) نے ایسی تصاویر شائع کیں جن کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ کمبوڈین حکومت نے گذشتہ ماہ ریم نیول بیس میں ریاستہائے متحدہ امریکہ کے تعمیر کردہ ایک عمارت کو منہدم کردیا تھا۔ گذشتہ سال پینٹاگون نے کمبوڈیا سے یہ وضاحت طلب کی تھی کہ اس نے امریکی سرمائے سے تعمیربحری اڈے کوکیوں مسمارکیا توکمبوڈیا کی حکومت نے جواب دینے سے صاف انکارکردیا تھا۔ جمعہ کو پینٹاگون نے کہا کہ وہ ان خبروں کے بارے میں تشویش میں ہے کہ امریکہ کی مالی اعانت سے کمبوڈین بحریہ کے اہم بحری اڈے کومسمارکردیا گیا اور اس نے کمبوڈین حکومت سے وضاحت طلب کی ہے۔ پینٹاگون نے ایک بیان میں کہا ، “ہمیں خدشات لاحق ہیں کہ کمبوڈین بحریہ کےلیے اس سہولت کو ختم کرنا کمبوڈیا کی حکومت عوامی جمہوریہ چین کے فوجی اثاثوں اور ریم نیول بیس پر اہلکاروں کی میزبانی کے منصوبوں سے منسلک ہوسکتا ہے۔” دوسری طرف کمبوڈیا کی حکومت نے ان خبروں کی تردید کی ہے کہ چین کمبوڈیا کے ساتھ خفیہ معاہدے پر پہنچ گیا ہے تاکہ وہ اپنی فوج کو اڈے پر رکھنے دے ، دوسری طرف کمبوڈین حکومت کی طرف سے یہ بیان دے کرامریکہ کووقتی طورپرچپ کروایا گیا ہے کہ غیر ملکی افواج کی میزبانی کرنا کمبوڈیا کے آئین کے منافی ہوگی۔ پینٹا گان کا کہنا ہے کہ یہ اڈہ بندرگاہی شہر سیہونوک ویل کے جنوب مشرق میں واقع ہے ، جو چین کی زیرقیادت جوئے بازی کے اڈوں کا مرکز اور چین کے زیر انتظام خصوصی اقتصادی زون کا مرکز ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں