عاصم سلیم باجوہ سے متعلق ڈیٹا کس پاکستانی نے فراہم کیا اور بدلے میں کیا ڈیمانڈ کی ۔۔؟ سابق بھارتی میجر “گورو آریا” کے انکشاف نے پاکستان میں ہنگامہ برپا کردیا

نئی دہلی (ویب ڈسیک) بھارتی خفیہ ایجنسی را کے لیے کام کرنے والے سابق بھارتی میجر گورو آریا نے خود ہی سب کچھ اگل دیا۔گورو آریا نے کہا ہے کہ لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ عاصم سلیم باجوہ سے متعلق ڈیٹا ایک پاکستانی نے فراہم کیا۔سی پیک کو متنازع بنانے کے لیے بھارت ایڑی چوٹی کا زور لگانے میں مصروف ہے۔سی پیک کے چئیرمین

لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ عاصم سلیم باجوہ پر الزامات لگانے والے سابق بھارتی میجر گورو آریا نے خود ہی سب کچھ اگل دیا۔گورو آریا نے کہا کہ لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ عاصم سلیم باجوہ سے متعلق معلومات ایک پاکستانی نے فراہم کیں۔بیس سے پچاس ہزار کے بدلے سب کچھ معلوم ہو جاتا ہے۔ایس ای سی پی اور نادرا سے باجوہ فیملی کے بارے میں ریکارڈ نکالا۔گورو آریا نے کہا کہ انہیں معلومات بھارت سے نہیں بلکہ پاکستان سے ملتی ہیں۔۔ واضح رہے کہ صحافی احمد نورانی کی جانب سے کچھ ہفتے قبل ایک خبر شائع کی گئی تھی جس کے مطابق سابق ڈی جی آئی ایس پی آر عاصم باجوہ کے اہل خانہ نے چار ممالک میں 99 کمپنیاں بنائیں، جن میں 133 ریستورانوں کے ساتھ پیزا فرنچائز بھی شامل ہے۔کئی کمپنیوں میں عاصم سلیم باجوہ کی اہلیہ بھی شراکت دار رہیں۔ بعد ازاں وزیراعظم کے معاون خصوصی نے وضاحت دیتے ہوئے الزامات کو جھوٹ قرار دیا تھا، اور کہا کہ بیرون ممالک ان کے خاندان کی جانب سے جتنی بھی سرمایہ کاری کی گئی، اس کی منی ٹریل کی تفصیلات موجود ہیں۔ جبکہ اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان نے نجی ٹی وی چینل کو دیے گئے انٹرویو میں کہا تھا کہ عاصم سلیم باجوہ اپنے جواب سے انہیں مطمئن کر چکے، لیکن اگر پھر بھی کوئی نئی بات سامنے آئی تو ایف آئی اے سے اس معاملے کی تحقیقات کروا لیں گے۔وزیراعظم کا کہنا ہے کہ عاصم سلیم باجوہ کے اثاثوں سے متعلق اگر مزید تفصیلات سامنے آئیں تو پھر ایف آئی اے سے تحقیقات کروا لیں گے۔ عمران خان کا کہنا ہے کہ عاصم سلیم باجوہ کے اثاثوں کا معاملہ سامنے آیا تو انہوں نے سامنے آ کر تمام تفصیلات سے آگاہ کیا۔ ہمیں بھی انہوں نے اپنے اثاثوں سے متعلق تمام تفصیلات فراہم کیں، تو میں نے وزیر قانون فروغ نسیم کو بلا کر کہا کہ ان تفصیلات کا جائزہ لیں۔ فروغ نسیم نے بتایا کہ عاصم سلیم باجوہ نے اثاثوں سے متعلق اٹھائے گئے تمام سوالات کو جواب دے دیا ہے۔ تاہم اب بھی اگر کئی یہ کہتا ہے کہ اس کے پاس عاصم سلیم باجوہ سے متعلق کچھ اور تفصیلات موجود ہیں، تو وہ سامنے لے کر آئے، اس کی تحقیقات کروا لیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں