میشا شفیع اور انکے 10 دوستوں کے خلاف مقدمہ درج کرنے والے افسر کے ساتھ کیا کر دیا گیا؟ سوشل میڈیا پر نی بحث کا آغاز

اسلام آباد( نیوز ڈیسک) گلوکارہ میشا شفیع اور ان کے دیگر دوستوں کے خلاف مقدمہ درج کرنے والے افسر کو معطل کر دیا گیا۔اسسٹنٹ ڈائریکٹر سائبر کرائم سیل آصف اقبال نے میشا شفیع اور ان کے دوستوں کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔ ایف آئی اے ذرائع کا کہنا ہے کہ اعلیٰ حکومتی شخصیت کے دباؤ پر آصف اقبال کو معطل کر دیا

گیا ہے۔ایف آئی اے ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ آصف اقبال نے میشا اور ان کے دوستوں کے خلاف مقدمہ کے اندراج کا ٹویٹ کیا تھا۔ آصف اقبال نے دو سال تک علی ظفر اور میشا شفیع کیس کی تفتیش کی۔دوسری جانب اپنے اس ٹویٹ میں آصف اقبال نے کہا تھا کہ اگر سوشل میڈیا پرکسی شخص کےبارے Fake News غلط خبرکی تشہیر کی جائے جس سے اسکی بدنامی ہو، جرم ہے جسکی سزا 3 سال قید یا 10لاکھ روپے جرمانہ یا دونوں ہیں۔

یہ ایک آگاہی ٹویٹ تھا جسے گلوکار علی ظفر نے ری ٹویٹ کیا ۔ اس ٹویٹ کو لیکر وفاقی وزیر شیریں مزاری کی صاحبزادی ایمان مزاری میدان میں کود پڑیں اور کہا کہ ایف آئی اے سائبرکرائم دراصل علی ظفر کا ترجمان ہے ، سارا سسٹم گلاسڑا ہے ، اسے ختم ہونا چاہئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں