سانحہ موٹروے کے مرکزی ملزم کے گرفتار نہ ہونے کااصل ذمہ دارکون ہے؟ڈی آئی جی آپریشنزکاحیران کن انکشاف

لاہور(ویب ڈیسک) ڈی آئی جی آپریشنز سہیل سکھیرا نے موٹروے کیس کے مرکزی ملزم عابد ملہی کے ابھی تک نہ پکڑے جانے کا ذمہ دار عوام کو ٹھہرا دیا۔سہیل سکھیرا کا کہنا تھا کہ ملزم عابد کہیں تو ہوگا، کہیں سے روٹی تو کھاتا ہوگا، سوسائٹی ہم سے کیوں تعاون نہیں کر رہی، کیا ملزم کو کہیں سے من و سلویٰ آتا ہے کھانے کیلئے۔

تفصیلات کے مطابق سانحہ موٹروے کو ایک ماہ ہونے کے قریب ہے لیکن ملزم عابد ملہی ابھی تک قانون کی گرفت سے باہر ہے۔ پولیس کی جانب سے ملزم کے خاکے جاری کئے گئے اور ملزم کے بارے میں اطلاع دینے والوں کیلئے25لاکھ روپے کے انعام کااعلان بھی کیا گیا تاہم ملزم عابد ملہی کو گرفتار کرنے میں ناکام رہی ۔ ایسے میں ڈی آئی جی آپریشنز سہیل سکھیرا کا اہم بیان سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے ملزم کو ابھی تک نہ پکڑے جانے کا ذمہ دار سوسائٹی کو ٹھہرا دیا ہے۔دوسری جانب لاہور پولیس نے موٹروے کیس کی تحقیقات میں مدد دینے والے وقار الحسن کو رہا کر دیا ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ وقار کو20 روز تک حراست میں رکھا گیا تھااور ڈی این اے بھی متاثرہ خاتون سے میچ نہیں ہوا۔وقار الحسن سے ہونے والی تفتیش کی مدد سے گرفتار ملزم شفقت تک پہنچے۔اس سے قبل وقار الحسن کے دو رشتہ داروں کو بھی رہا کیا جا چکا ہے۔مکمل چھان بین کے نتیجے میں رہا کیے جانے والے دونوں افراد کا کیس سے کوئی تعلق ثابت نہیں ہوا۔متاثرہ خاتون بھی ملزم کی شناخت سے انکار کر چکی ہے۔


اپنا تبصرہ بھیجیں