سی سی پی او لاہور عُمر شیخ نے معذرت کر لی، وجہ نے پاکستانیوں کو غصے سے آگ بگولہ کر دیا

لاہور(نیوز ڈیسک ) سی سی پی او لاہور نے موٹروے پر اہلکار تعینات کرنے سے معذرت کر لی۔لاہور پولیس نے آئی جی پنجاب کو اس حوالے مراسلہ جاری کیا ہے۔سی سی پی او عمر شیخ کا کہنا ہے کہ لاہور پولیس کو پہلے ہی نفری کی کمی کا سامنا ہے۔نفری دینا ممکن نہیں۔آئی جی پنجاب

نے لاہور سیالکوٹ موٹروے کی سیکیورٹی پر غور شروع کر دیا ہے۔اس حوالے اہم فیصلے بھی متوقع ہیں۔ موٹروے زیادتی کے بعد پنجاب پولیس سے اہلکاروں کو موٹروے پولیس بھجوانے کے لیے آئی جی پنجاب انعام غنی کی جانب سے موٹروے میں جانے والے خواہشمند اہلکاروں سے درخواستیں طلب کرنے کے حوالے سے سی سی پی او لاہور محمد عمر شیخ نے لاہور پولیس میں نفری کی کمی کا بہانہ بنا کر آئی جی پنجاب کو صاف جواب دے دیا ہے۔سی سی پی او نے آئی جی پنجاب کو نفری نہ بجھوانے کے حوالے سے خط لکھ دیا ہے۔سانحہ گجرپورہ کے بعد سیالکوٹ موٹروے پر اہلکاروں کو تعینات کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔آئی جی نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹرویز پولیس کی جانب سے آئی جی پنجاب کو خط لکھا گیا ہے کہ سب انسپکٹر سے کانسٹیبل رینک کے 100 اہلکاروں کو ڈیپوٹیشن پر موٹروے پولیس میں بھجوا جائے۔واضح رہے کہ لاہورسیالکوٹ موٹروے پر خاتون سے زیادتی کے واقعے نے جہاں موٹروے پر سکیورٹی کی صورتحال پر سوالات اٹھائے وہیں ایک اہم خبر سامنے آئی تھی۔بتایا گیا تھا کہ سابق آئی جی پنجاب کا موٹروے پر سیکیورٹی کیلئے خط منظرعام پرآگیا ۔ شعیب دستگیر نے سیکیورٹی کیلئے 28 جولائی کوخط لکھا تھا۔لیکن 2 ماہ کے بعد بھی موٹروے پر پولیس تعینات نہ ہوسکی، وفاقی سیکریٹری مواصلات نے آئی جی کے خط پر کوئی ایکشن نہیں لیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں