روزمرہ کے استعمال کی ادویات میں کتنا اضافہ ہوا؟ مکمل تفصیلات سامنے آگئیں

لاہور (ویب ڈیسک) نزلہ زکام کی دوائی ایرینک فورٹ کی ڈبی پہلے 560 روپے کی تھی جو اب 740 روپے کی کر دی گئی، سیرپ بروفن کی قیمت پہلے 67 تھی جو اب 75 روپے ہوگئی۔ موشن و پیٹ درد کی دوائی اینٹامیزول ڈی ایس کی ڈبی پہلے 94 کی تھی اب 107 روپے کر دی گئی۔

مرگی کی دوائی ایپی وال کی ڈبی پہلے 1028 روپے کی تھی جو اب 1075 روپے کر دی گئی۔ سانس کی دوائی تھیو گریڈ کی ڈبی پہلے 260 کی تھی جو اب 360 روپے کی کر دی گئی۔ چکروں کی دوائی سرک کی ڈبی 584 سے بڑھاکر 747 روپے کی کر دی گئی ۔ شوگر کی دوائی گلوکوفیج کی ڈبی پہلے 105 روپے میں ملتی تھی اب اسکی قیمت بڑھ کر 124 روپے ہو گئی۔ یرقان کا سیرپ ہیپا مرز پہلے 160 کا تھا اب 210 روپے میں ملے گا۔ کتے کاٹے کی ویکسین پہلے 850 کی تھی اب 1641 روپے کی کر دی گئی ہے ، الرجی کی دوائی فیکسٹ ڈی کی ڈبی پہلے 118 تھی جو اب 132 کر دی گئی۔ امراض مثانہ کی دوائی تیمسولین کی پہلے قیمت 840 تھی جو اب 1080 روپے کر دی گئی۔ ایڈیشنل سیکرٹری ڈرگ ونگ سہیل احمد کا کہنا ہے کہ ادویات کی قیمتوں میں ہارڈشپ کیسز کے تحت کیا گیا جن ادویات کی قیمتیں بڑھائی گئی ہیں ان کاسٹ اور را مٹیریل مہنگا ہو چکا ہے ۔ اگر ادویات کی قیمتوں میں اضافہ نہ ہوتا تو ادویات کی دستیابی ممکن نہ ہو پاتی۔