حیران کُن صورتحال پیدا

لاہور(نیوز ڈیسک) سانحہ موٹروے، کرول گاٹی گاؤں میں لوگ اپنی رہائش گاہیں چھوڑ کر غائب ہونے لگے ہیں۔کرول گاٹی گاؤں میں خانہ بدوشوں کی بستی کے کئی گھروں کو تالے لگے ہوئے ہیں اور لوگ پولیس کے خوف سے فرار ہو گئے ہیں۔سانحہ موٹر وتے کے بعد پولیس کا سب سے پہلا شک

اسی گاؤں پر گیا تھا کیونکہ کہا جا رہا تھا کہ ملزم کسی قریبی گاؤں کے ہیں جو واردات کے بعد واپس اسی گاؤں واپس چلے گئے۔واقعے کے بعد کرول گاٹی گاؤں میں کئی مردوں کے سیمپل بھی لیے گئے تھے۔ پولیس نے اس بستی سے درجنوں افراد کو تفتیش کے لیے حراست میں لے لیا۔پولیس کے ڈر کی وجہ سے اس بستی کے اکثر رہائشی اپنے بچوں اور سامان کو ہیں چھوڑ کر غائب ہو گئے۔جب کرول گاٹی کے رہائشیوں نے یہ بھی مطالبہ کیا ہے کہ ملزمان کو اسی جگہ پر نشان عبرت بنایا جائے۔پولیس کے مطابق پورے علاقے میں جانچ پڑتال جاری ہے،جو لوگ گھروں کو تالے لگا کر جا چکے ہیں ان سے متعلق بھی ڈیٹا اکٹھا کیا جا رہا ہے۔جرائم میں ملوث پائے جانے والے افراد کو حراست میں لیا جائے گا۔ تین روز قبل لاہور کی سپیشل برانچ سی آئی اے اور ضلعی پولیس پر مشتمل مختلف ٹیموں نے لاہور سیالکوٹ موٹر وے سے ملحقہ کرول گائوں میں سرچ آپریشن کر کے اسی طرح کے کیسز میں ملوث تین ریکارڈ یافتہ ملزمان کو حراست میں لیا تھا جبکہ پولیس نے حراست میں لئے گئے ملزمان سے تفتیش شروع کردی ہے۔

حیران کُن صورتحال پیدا” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں