کشمالہ طارق کا تہلکہ خیز انکشاف

اسلام آباد (ویب ڈیسک) ںامور خاتون سیاستدان کشمالہ طارق نے کہا ہے کہ این جی اوز بداخلاقی کے مجرموں کو سزا سے بچانے آجاتی ہیں۔ نجی ٹی وی سے گفتگو میں انکامزید کہنا تھا ایسے سفاک مجرموں کو سزا دینے کیلئے قانون میں سقم ہے جبکہ عبرتناک سزا پرانسا نی حقوق کی تنظیموں اور پارلیمنٹ میں

تقسیم پیدا ہوجاتی ہے۔وفاقی محتسب کا کہنا تھا مجرموں کو سزادینے کیلئے قانو ن پر سب کا متفق ہونا ضروری ہے۔بداخلاقی کا کوئی بھی واقعہ ہو شاہدین کو تماش بین بننے کے بجائے ذمہ داری کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔کشما لہ طارق نے کہا این جی او سیکٹر کہتا ہے اسلامی سزائیں نہ دی جائیں لیکن جب موٹروے بداخلاقی جیسے واقعات ہوتے ہیں تو مطالبہ کیا جاتا ہے تختہ دار پر چڑھانے کی سزا دی جائے۔ این جی او اور سول سوسائٹی والے کہتے ہیں یہ سزا نہ دی جائے لیکن اس قسم کے واقعات پر کہتے عبرتناک سزا دی جا ئے۔ ان کا کہنا تھا پارلیمنٹ کوئی ایسا قانون بنائیں جس سے سب کے ہاتھ بندھ جائیں۔انہوں نے اس بات کی حمایت کی کہ بداخلاقی کرنیوالے مجرموں کو عبرتناک سزادینی چاہیے،ماضی میں لوگ ایسے کیسز رپورٹ نہیں کرتے تھے لیکن اب ایسا ہو رہا ہے۔ ہم اپنے پاس آنیوالے کیسز کو دو ماہ میں حل کرتے ہیں۔ وزیراعظم وفاقی محتسب سے براہ راست رپورٹ لیتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں