موٹروے واقعہ کے اصل مجرم کو پکڑنا ذرا بھی مشکل نہیں ، پولیس کو چاہیے کہ ۔۔۔۔۔۔ سابق آئی جی اسلام آباد طاہر عالم نے بڑے کام کا مشورہ دے دیا

کراچی (ویب ڈیسک)سابق آئی جی اسلام آباد طاہر عالم خان نے کہا کہ لاہور موٹروے کیس میں ملزم کو جیو فینسنگ سے ٹریس کرنا مشکل کام نہیں تھاجبکہ ماہر افغان امور رحیم اللہ یوسف زئی نے کہا کہ افغانستان کا مسئلہ بہت پرانا اور پیچیدہ ہے اسے حل کرنا آسان نہیں ‘

انٹراافغان مذاکرات کی کامیابی بڑا چیلنج ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جیو نیوز کے پروگرام ”نیا پاکستان شہزاد اقبال کے ساتھ“ میں اظہارخیال کرتے ہوئے کیا۔ میزبان شہزاد اقبال نے پروگرام میں تجزیہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ موٹروے پر خاتون سے ظلم کے کیس میں نامزد ایک ملزم وقار الحسن نے آج گرفتاری دیدی ، وقار الحسن نے صحت جرم سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ میں اس کیس میں ملوث نہیں ہوں آپ میرا معائنہ کرا لیں. پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے نامزد ملزم وقار الحسن کے بھائی محمد شبیر نے کہا کہ وقار پر تین چار سال پہلے بکری چوری کا جھوٹا کیس بنایا گیا تھا، جس رات خاتون سے یہ واقعہ ہوا وقار گھر میں تھا ، وقار کے نام پر ایک سم اس کے سسر جبکہ دو سمیں اس کے سالے کے پاس چل رہی ہیں، عباس ہمارے گاؤں سے تین کلومیٹر آگے غازی کوٹ میں رہتا ہے،ہم چور مجرم ہوتے تو وقار کو خود نہ پیش کرواتے۔ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن نے گزشتہ روز حکمران اتحاد میں شامل ق لیگ کے سربراہ چوہدری شجاعت حسین سے انکی رہائشگاہ پرملاقات کی اور انکی عیادت کی۔ ملاقات کے بعد دونوں رہنمائوں نے میڈیا سے الگ الگ گفتگو کی۔ مولانا فضل الرحمٰن نے کہا کہ APC میں طےہوگا کتنا حلوہ کھانا ہے، ورنہ سارا حکومت کھاجائیگی۔ جبکہ چوہدری شجاعت کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمٰن سے ملاقات غیرسیاسی تھی۔فضل الرحمٰن نے بتایا کہ چودھری شجاعت حسین سے ملاقات میں سیاسی باتیں نہیں ہوئیں۔انہوں نے مزید کہا کہ اب تو ملک میں عام خاتون کی عزت بھی محفوظ نہیں،خاتون کی عزت پر ہاتھ ڈالنے والے عناصر کو عبرتناک سزا دی جائے، ہمیں روایت سے ہٹ کر مضبوط فیصلے کرنے ہوں گے۔ ذمے دار افراد ایسے بیانات دے رہے جو زخم پر مزید نمک چھڑکنے کے مترادف ہے۔ اے پی سی کی تاریخ طے ہوچکی ہے، پیپلز پارٹی اس کی میزبان ہے۔انہوں نے کہا کہ 20تاریخ کو اپوزیشن بیٹھ رہی ہے، طے کرنا ہے کتنا حلوہ کھانا ہے ورنہ سارا حکومت کھا جائے گی۔سربراہ جے یو آئی نے کہا کہ ملک میں بیروزگاری، مہنگائی عروج پر ہے، روپے کی قدر زمین بوس ہوچکی اور اب تو ملک میں عام خاتون کی عزت بھی محفوظ نہیں۔چودھری شجاعت حسین نے کہا کہ مولانا فضل الرحمٰن سے ملاقات غیر سیاسی تھی، ملاقات کے دوران سیاست کے سوا ہر موضوع پر بات ہوئی۔میں نے مولانا فضل الرحمٰن سے کہا کہ کورونا وائرس اللہ تعالیٰ کی طرف سے وارننگ ہے جس نے ساری دنیا کا معیار بدل ڈالا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں