آئی جی پنجاب انعام غنی کس شرمناک دھندے میں ملوث رہے؟ سابق آئی جی کا انکشاف

لاہور (ویب ڈیسک) آئی جی پنجاب انسانی اسمگلنگ میں ملوث رہے، سابق آئی جی نے انکشاف کردیا ۔ رپورٹ کے مطابق سابق آئی جی پنجاب ذوالفقار چیمہ نے کہا ہے کہ موجودہ آئی جی پنجاب انعام غنی انسانی سمگلنگ میں ملوث رہے ہیں۔ نجی ٹی وی جی این این کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے

سابق آئی جی پنجاب ذوالفقار چیمہ کا کہنا تھا کہ جس وقت موجودہ آئی جی پنجاب انعام غنی ایف آئی اے امیگریشن کا ڈائریکٹر تھا ، اس وقت انسانی سمگلنگ کے واقعات بہت بڑھ گئے تھے۔ برطانوی ہائی کمیشن کی شکایت پر ایف آئی اے نے اس کی تحقیقات پولیس کے ذمے لگائیں۔ ذوالفقار چیمہ کے مطابق انسانی سمگلنگ کی تحقیقات کیلئے جو کمیٹی بنائی گئی اس کا سربراہ کیپٹن شعیب کو لگایا گیا، وہ بہت ہی ایماندار اور دلیر افسر تھا۔ ان کی سربراہی میں قائم ہونے والی کمیٹی نے انعام غنی کو مجرم قرار دیا جس کے بعد 2 سال تک ان کی پرموشن رک گئی تھی۔ سابق آئی جی پنجاب ذوالفقار چیمہ نے بتایا کہ کیپٹن شعیب بعد میں موجودہ وزیر اعظم عمران خان کو ملا اورانعام غنی کے بارے میں سارے فیکٹس بتائے۔ وزیر اعظم نے انٹرکام اٹھا کر اعظم خان کو کہا کہ کدھر ہے یہ انعام غنی، اس کو تو سروس میں ہی نہیں ہونا چاہیے، یہ تو ملک کی بدنامی کا باعث ہے۔ ذوالفقار چیمہ نے نجی ٹی وی چینل پر گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ حیران ہوں کہ اسی بری شہرت کے آدمی کو جس کو وزیر اعظم صاحب نکالنے کے چکر میں تھے ، اسے ملک کے سب سے بڑے صوبے کا آئی جی لگادیا ہے، اس صوبے نے کیا جرم کیا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں