بریکنگ نیوز: میڈیکل کالجوں کی فیسوں میں بڑی کمی ۔۔۔ طلباء وطالبات خوشی سے جھوم اٹھے

لاہور(ویب ڈیسک) پرائیویٹ میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالجز میں داخلہ لینے والے طلبا کیلئے اچھی خبر، پی ایم ڈی سی نے پرائیویٹ کالجز سالانہ فیس ساڑھے نو لاکھ روپے مقرر کردی ،آئندہ سیشن میں پرائیویٹ میڈیکل کالجز میں داخل ہونے والے سالانہ فیس یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز میں جمع کروائیں گے۔ پرائیویٹ میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالجز میں داخلہ لینے کے خواہشمند طلبا کیلئے اچھی خبر،

پی ایم ڈی سی نے رواں برس پرائیویٹ کالجز میں ایم بی بی ایس اور بی ڈی ایس میں داخلہ لینے والے طلبا کی اضافی فیسیں وصول کرنے کی شکایات کے ازالہ کیلئے بڑا فیصلہ کیا ہے۔پرائیویٹ میڈیکل کالجز میں داخل ہونے والے سٹوڈنٹس کی سالانہ فیس یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز میں جمع ہوگی۔ فارن سٹوڈنٹس بھی ڈالرز میں فیس یو ایچ ایس کو جمع کروائیں گے۔ یوایچ ایس ایم بی بی ایس اور بی ڈی ایس کے داخلے مکمل کرکے فیسیں متعلقہ میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالجز کے اکاؤنٹس میں ٹرانسفر کرے گی۔پی ایم ڈی سی کی جانب سے پرائیویٹ میڈیکل کالجز کی سالانہ فیس بھی ساڑھے 9 لاکھ مقرر کر دی گئی ہے، جس میں ہاسٹل کی سالانہ فیس بھی شامل ہوگی۔ رواں برس 18 اکتوبر کو میڈیکل کالجز کے انٹری ٹیسٹ کے بعد ہونے والوں داخلوں پراس فیصلے کا اطلاق کردیا گیا ہے۔ دوسری طرف ایک خبر کے مطابق قومی احتساب بیوروکے چیئرمین جسٹس(ر) جاویداقبال نے بلین ٹری سونامی پروجیکٹ خیبر پختونخوا میں بدعنوانی کے الزامات پر 6انکوائریوں اور 4 انویسٹی گیشنز کی منظوری دے دی۔ تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں چیئرمین نیب کی زیر صدارت نیب ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس ہوا جس میں ڈپٹی چئیرمین نیب، پراسیکیوٹر جنرل اکانٹیبلٹی نیب، ڈی جی آپریشن نیب اور ڈی جی نیب راولپنڈی شریک ہوئے جب کہ ڈی جی نیب خیبرپختونخوا، ڈی جی نیب سکھر اور ڈی جی نیب کراچی نے بذریعہ ویڈیو لنک شرکت کی۔نیب اعلامیے کے مطابق اجلاس میں چیئرمین نیب نے بلین ٹری سونامی پروجیکٹ خیبر پختونخوا میں 4الگ الگ تحقیقات اور6انکوائریوں سمیت ٹیکسٹ بورڈ خیبر پختونخوا کے افسران اور دیگر کے خلاف تحقیقات کی منظوری دی۔اجلاس میں پاکستان پیٹرولیم لمیٹڈ(پی پی ایل)کے سابق منیجنگ ڈائریکٹر، چیف ایگزیکٹو آفیسر ،رکن بورڈ آف ڈائریکٹرز اور دیگر کےخلاف ریفرنس دائرکرنے کی بھی منظوری دی گئی، ملزمان پر تیل و گیس کی تلاش کےٹھیکےمیں بدعنوانی کاالزام ہے ۔اعلامیے کے مطابق محکمہ تعلیم اورخواندگی حکومت سندھ کے افسران واہلکاروں کیخلاف بھی تحقیقات کی منظوری دی گئی۔اس موقع پر چیئرمین نیب نے کہا کہ مفرور اور اشتہاری ملزمان کی گرفتاری کے لیے قانون کے مطابق اقدامات کیے جائیں گے،نیب ملک سے بدعنوانی کے خاتمے اور کرپشن فری پاکستان کے لیے انتہائی سنجیدہ ہے، نیب کی اولین ترجیح میگاکرپشن کے مقدمات کو منطقی انجام تک پہنچانا ہے۔چیئرمین نیب نے کہا کہ نیب نے 468ارب روپے برآمدکرکے قومی خزانے میں جمع کرائے، نیب کی کارکردگی کو معتبر قومی اور بین الا قوامی اداروں نے سراہا ہیجو نیب کے لیے اعزازکی بات ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں