اگر فہمیدہ مرزا میرا ایک مشورہ مان لیتیں تو آج پاکستان کی دوسری خاتون وزیراعظم ہوتیں ۔۔۔۔۔۔ عزیر بلوچ کے قریبی ساتھی حبیب جان بلوچ کا تہلکہ خیز انکشاف

کراچی (ویب ڈیسک) عزیر بلوچ کے قریبی ساتھی حبیب جان بلوچ نے کہا ہے کہ اگر فہمیدہ مرزا میرا ایک مشورہ مان لیتیں تو آج پاکستان کی دوسری خاتون وزیراعظم ہوتیں، انہوں نے کہا کہ تمام بیانات کے بعد اس جے آئی ٹی کی کوئی اہمیت نہیں رہ جاتی، اب وفاقی وسندھ حکومتوں کو

چاہئے کہ جو جے آئی ٹیز ان کے پاس ہیں وہ انہیں ڈسٹ بن میں ڈال دیں، ڈاکٹر ذوالفقار مرزا کی سیاست پر پابندی کو ہٹایا جائے اور ان کو سیاست کرنے دی جائے کیوں کہ سندھ کو ایک غیرت مند مرد کی ضرورت ہے، عزیر بلوچ نے بھی بیان سے انکار کیا ہے ،اگر جے آئی ٹی پہلے مشکوک تھی تو اس کے بعد اب ڈبل مشکوک ہوگئی ہے ۔اس جے آئی ٹی کی Credibilityیہ ہے کہ سندھ حکومت کہتی ہے کہ ہمارے پیپر صحیح ہیں جبکہ وفاقی حکومت کہتی ہے کہ ہمارے پیپر صحیح ہیں،ایک وزیر کہتے ہیں کہ کوئی موٹر سائیکل والا آیا اور دیکر چلا گیا ،جبکہ ایک دوسرے وزیر کا کہنا ہے کہ علی زیدی کو یہ جے آئی ٹی کوئی بائیک والا دیکر نہیں گیا بلکہ پی پی کے کسی صوبائی وزیر نے علی زیدی تک پہنچائی ہے،ان تمام بیانات کے بعد اس جے آئی ٹی کی کوئی اہمیت نہیں رہ جاتی ،اب وفاقی وسندھ حکومتوں کو چاہئے کہ جو جے آئی ٹیز ان کے پاس ہیں وہ انہیں ڈسٹ بن میں ڈال دیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نےایک انٹرویو میں کیا۔انہوں نے کہا کہ جنوبی افریقا میں بڑے جرائم ہوا کرتے تھے،نیلسن منڈیلا نے اقتدار سنبھالتے ہی سب سے پہلا کام جو کیا عام معافی کا اعلان نہیں تھا بلکہ انہوں نے Truth Reconciliation Commissionبنایااور کہا کہ تمام طبقے آجائیں اور اپنے جرائم کا اعتراف کریں،ریاست فیصلہ کرے گی کہ وہ معاف کرتی ہے یا نہیں۔اگر ریاست معاف کرتی ہے تو اس سے کئی مسائل حل ہو سکتے ہیں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں