غیر ملکیوں کی واپسی کے بارے میں لائحہ عمل جاری؟ سعودی عرب نے اہم وضاحت جاری کردی

ریاض (ویب ڈیسک )سعودی حکام نے سعودی عرب میں غیر ملکی آمد و رفت کے حوالے سے ایک بار پھر وضاحت کی ہے کہ تاحال حکومت کی جانب سے کسی لائحہ عمل کا اعلان نہیں ہوا۔سعودی عرب میں کورونا وائرس کی وجہ سے تاحال بیرون ملک سے آنے والے پروازوں پر پابندی برقرار ہے اور اس حوالے سے حکام کی جانب سے کسی قسم کا لائحہ عمل جاری نہیں کیا گیا۔محکمہ پاسپورٹ کے ذرائع کا کہنا ہے کہ سرکاری طور پر پروازوں کی بحالی کے حوالے سے اعلان کے بعد غیر ملکیوں کی واپسی کے بارے میں لائحہ عمل جاری کیا جائے گا۔محکمہ پاسپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے لیے مختلف ممالک سے

پروازوں کی بحالی کے حوالے سے تاحال کسی قسم کی حتمی اطلاع نہیں، جیسے ہی متعلقہ اداروں کی جانب سے لائحہ عمل مرتب کیا جائے گا، سرکاری سطح پر اس کا اعلان کر دیا جائے گا۔علاوہ ازیں سعودی عرب میں رہنے والے تمام غیر ملکی جو خروج و عودہ پر اپنے ملک گئے ہوئے ہیں ان کی واپسی کے حوالے سے بھی تاحال کسی قسم کا سرکاری اعلان جاری نہیں ہوا ہے۔اسی طرح وہ غیر ملکی جو اپنے وطن گئے ہوئے ہیں ان کی واپسی بھی تاحال ممکن نہیں ہو رہی۔خیال رہے کہ کورونا وائرس کی وبا کے دوران جب مملکت میں کرفیو اور لاک ڈاؤن کا سلسلہ جاری تھا تب حکومت نے مملکت میں رہنے والے غیر ملکیوں کے اقاموں میں 3 ماہ کی مفت توسیع کی تھی۔دوسری بار ایوان شاہی سے ان تارکین کو رعایت دی گئی جو بیرون مملکت چھٹی یعنی خروج و عودہ پر گئے ہوئے تھے۔علاوہ ازیں وزٹ ویزے پر آنے والے غیر ملکی جو حالات کے سبب سفری پابندی کی وجہ سے مقررہ مدت کے دوران اپنے ملک نہیں جاسکے تھے، ان کے ویزوں کی مدت میں بھی مفت توسیع کی گئی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں