” ایسا کرنے سے پاکستانی سیاست کی کایہ نہ پلٹی تو میرا نام جاوید اقبال رکھ دینا۔۔۔!!! “ سرینڈر ہونے کے حکم کے بعد سلیم صافی نے نواز شریف کو ناقابل یقین مشورہ دے دیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک ) ایون فیلڈ ریفرنس میں نوازشریف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست پر اسلام آباد ہائیکورٹ نے تحریری حکمنامہ جاری کیا جس میں سابق وزیراعظم کو سرینڈر کرنے کیلئے 9 روز کی مہلت دی گئی ہے۔اس حوالے سے مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر سلیم صافی نے کہا کہ میاں صاحب ہمت کرکے

پہلی مہیا فلائٹ سے اسلام آباد آجائیں اور پھر ہمیشہ کے لئے باہر نہ جانے کا اعلان کرلیں۔ ایسا کرنے کی صورت میں پاکستانی سیاست کا کایہ نہ پلٹا تو میرا نام ارشد ملک یا جاوید اقبال رکھ لیں۔واضح رہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے تحریری حکمنامے میں کہا ہے کہ قانون کی بالادستی ہر صورت قائم رہنی چاہیے ، نوازشریف نے بیرون ملک جانے سے متعلق آگاہ نہیں کیا۔ فیصلے میں کہا گیاہے کہ ضمانت ختم ہونے کے بعد جب اپیلیں سماعت کیلئے پیش ہوئیں تو وہ نوازشریف عدالت میں پیش نہیں ہوئے تو انہیں سرینڈر کرنے کا موقع دیا جارہاہے ، آئندہ سماعت 10 ستمبر سے پہلے سرینڈر کریں۔4 صفحات پر مشتمل فیصلہ جسٹس عامر فاروق کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے تحریر کیا۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو فوری گرفتاری دینے کا حکم دے دیا ہے، عدالت نے کہا کہ نوازشریف آئندہ سماعت سے قبل گرفتاری دیں،قانون کی بالادستی ہرصورت قائم رہنی چاہیے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف کی اپیل پر سماعت ہوئی، جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی نے اپیل کی سماعت کی۔نوازشریف کی جانب سے وکیل خواجہ حارث پیش ہوئے۔عدالت نے سماعت کے بعد اپنے حکم نامے میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کی فوری گرفتاری کا حکم جاری کردیا ہے۔ جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی نے حکم نامے پر دستخط کیے۔حکم نامے میں کہا گیا کہ العزیزیہ ریفرنس میں نوازشریف کی ضماعت ختم ہوچکی ہے۔قانون کی بالادستی ہرصورت قائم رہنی چاہیے۔نوازشریف نے بیرون ملک جانے سے قبل آگاہ نہیں کیا۔ لہذانوازشریف آئندہ سماعت سے قبل گرفتاری دیں۔ نوازشریف کو سرنڈر کرنے کیلئے 9روز کی مہلت ہے، نوازشریف سے متعلق اپیل پر مزید سماعت 10ستمبر کو ہوگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں