کورونا وائرس کا خاتمہ یقینی۔۔۔!! بڑے ترقیافتہ ملک نے جلد کورونا ویکسین بنا کر مفت فراہم کرنے کا اعلان کردیا

سڈنی (ویب ڈیسک) آسٹریلیا نے اعلان کیا ہے کہ اس نے کورونا ویکسین کی تیاری کے لیے آکسفورڈ یونیورسٹی کا ساتھ حاصل کرلیا ہے اور جلد کورونا کی ویکسین تیار کرکے اسے مفت فراہم کیا جائے گا۔ برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق آسٹریلیا میں کورونا ویکسین

دواساز کمپنی آسٹرا زینیکا اور آکسفورڈ یونیورسٹی کے اشتراک سے تیار کی جارہی ہے جس کے تجرباتی مراحل جلد مکمل ہونے والے ہیں۔ آسٹریلیا میں تیار ہونے والی کورونا وائرس ویکسین ان پانچ ممالک میں سے ایک ہوگی جنہیں قابل اعتماد سمجھا گیا ہے۔ اس حوالے سے آسٹریلوی وزیراعظم اسکاٹ موریسن کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے لیے ویکسین انتہائی ضروری ہے اور اگر اس کے تمام تجرباتی مراحل کامیاب ہوئے تو آسڑا زینیکا سے معاہدہ پکا ہوگا۔ آسٹریلوی وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ویکسین کی ہر طریقے سے تصدیق ہونے کے بعد اسے آغاز میں آسٹریلیا کی 25 ملین آبادی کو مفت فراہم کیا جائے گا۔ تاہم آسٹریلیا میں اب تک کورونا ویکسین کو فروخت کرنے کے لیے کوئی قیمت مختص نہیں کی گئی ہے۔ واضح رہے کہ آسٹریلیا میں کورونا وائرس کیسز کی تعداد23 ہزار 989ہوچکی ہے جب کہ اموات کی کل تعداد 216 ہے۔ دوسری جانب کورونا ویکسین کی پاکستان میں آزمائش کی تیاریاں شروع کر دی گئی ہیں اور اس مقصد کے لے رضاکاروں کے ناموں کے اندارج کا آغاز بھی ہو گیا ہے۔وائس چانسلریونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز پنجاب ڈاکٹر جاوید اکرم کا کہنا ہے کہ آکسفورڈ یونیورسٹی کے اشتراک سے کورونا کی ویکسین کی آزمائش پاکستان میں بھی کی جائے گی۔ڈاکٹر جاوید اکرم کا کہنا ہے کہ کورونا کی آزمائش کے لیے رضاکاروں کے ناموں کا اندراج شروع کردیا گیا، کورونا ویکسین کی آزمائش کے لیے 20 ہزار افراد کا اندراج کیا جائےگا۔انہوں نے مزید بتایا کہ ویکسین کی آزمائش کے لیے دو ماہ لگ سکتے ہیں، برطانیہ سے ویکسین بھیجنے کی تصدیق پر حکومت پاکستان سے اجازت لی جائے گی۔خیال رہے کہ کورونا ویکسین کی تیاری کے لیے دنیا بھر میں کوششیں جاری ہیں تاہم ابھی تک کورونا کے حوالے سے سائنسدانوں کو مکمل کامیابی حاصل نہیں ہو سکی ہے البتہ مختلف ممالک کی جانب سے مختلف ادویات کی انسانوں اور جانوروں پر آزمائش کی جا رہی ہے۔