بریکنگ نیوز: شادی کی تقریبات میں شرکت کرنے والے 47 افراد کورونا کا شکار ، پتہ لگنے پر وہاں کیا واقعہ پیش آیا ؟ جان کرآپ بھی شادی میں جانے سے پہلے سو مرتبہ سوچیں گے

دُبئی(ویب ڈیسک) متحدہ عرب امارات میں حکومت کی جانب سے سماجی و خاندانی تقریبات اور پانچ سے زائد افراد کے اجتماع پر پابندی کو بہت سے لوگ خاطر میں نہیں لا رہے جس کے نتیجے میں بہت سے خاندانوں کے سینکڑوں افراد کورونا کا شکار ہو چکے ہیں۔ اماراتی حکومت کے ترجمان کی جانب سے بتایا گیا

ہے کہ حالیہ دنوں بھی پانچ خاندانوں کے 47 افراد شادی اور نجی تقریبات میں شرکت کرنے پر کورونا کا مرض لگوا بیٹھے۔ایک آن لائن پریس بریفنگ سے خطاب کرتے ہوئے اعلیٰ عہدے دار نے بتایا کہ شادی کی تقریبات اور نجی تقریبات میں درجنوں افراد کی شرکت سے دیگر افراد کو بھی کورونا کا مرض لاحق ہو گیا۔ عہدے دار کا کہنا تھا کہ جمعرات سے امارات بھر میں عید الاضحی کی چار روزہ تعطیلات شروع ہو رہی ہیں۔اس دوران لوگ گھروں تک ہی محدود رہیں اور دعوتوں کا اہتمام کرنے سے گریز کریں۔ایک دوسرے کو عید کی مبارک باد سوشل میڈیا اور فون کالز کے ذریعے دینا ہی بہتر رہے گا۔ اماراتی وزیر صحت عبدالرحمن بن محمد الاویس نے تاکید کی ہے کہ سماجی دوری اختیار کرنا اور ماسک پہننا ایک قومی ذمہ داری ہے۔ کورونا کے خلاف جدوجہد کرنے والوں کی قربانیوں کا رائیگاں نہ جانے دیں، کیونکہ ڈاکٹرز اور نرسز دوسروں کی زندگیاں بچانے کے لیے عید الاضحی کی تعطیلات ہسپتالوں میں ہی گزار کر ایک بڑی قربانی دے رہے ہیں۔جب بھی کورونا سے متاثرہ کوئی مریض کھانستا یا چھینکتا ہے تو اس کے آس پاس موجود افراد کے کورونا سے متاثر ہونے کے خطرات بہت زیادہ ہوتے ہیں۔ واضح رہے کہ چند روز قبل بھی ابوظبی میں ایک شادی کی تقریب میں شرکت کے بعد 20 سے زائد افراد کورونا کا شکار ہو گئے۔ ابوظبی پبلک ہیلتھ سنٹر کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ ان افراد نے حکومت کی جانب سے سماجی دُوری کے احکامات کی خلاف ورزی کرتے ہوئے شادی کی تقریب میں شرکت کی جس کے بعدیہ لوگ کورونا کی خطرناک بیماری میں مبتلا ہو گئے۔