پاکستانی مصنوعات کی دھوم۔!! قطر اور سعودی عرب سے برآمد میں ریکارڈ اضافہ، کوروناوائرس کے دورانیے میں دوست ممالک سے کتنے ارب ڈالر برآمد کیے؟ شاندار تفصیلات آگئیں

کراچی (ویب ڈیسک) کرونا وائرس کے باعث جہاں مختلف ممالک کی برآمدات میں کمی سامنے آئی ہے وہیں مختلف ممالک ایسے ہیں جہاں برآمدات میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے، وزارت تجارت نے قومی اسمبلی کو آگاہ کیا ہے کہ مارچ کے مہینے میں عالمی سطح پر معاشی سست روی کے باوجود کچھ ممالک کے لیے برآمدات میں اضافہ ہوا ہے۔

ایک رپورٹ کے مطابق برآمدات میں اضافے کے لئے اٹھائے حکومتی اقدامات کے بارے میں متعدد مرتبہ کیے گئے سوالات کے جواب میں وزارت تجارت نے ایوانِ زیریں کو تفصیلات فراہم کیں، جس میں بتایا گیا کہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے بعد سعودی عرب اور قطر کے لیے برآمدات میں خاطر خواہ اضافہ ہوا۔ سعودی عرب مشرق وسطیٰ میں ایشیا کی برآمدات کی سب سے بڑی منزل بن کر ابھرا اور جون میں سعودی عرب کے لیے برآمدات میں 34 فیصد اضافہ ہوا،اعداد و شمار کے مطابق پاکستان اور سعودی عرب کے مابین باہمی تجارت کا حجم مالی سال 2020 میں 2 ارب 18 کروڑ 10 لاکھ ڈالر تک پہنچ چکا ہے۔ سعودی عرب کے لیے برآمدات میں ہر سال اضافہ دیکھنے کو ملا ہے مالی سال 2017 میں اس کا حجم 33 کروڑ 69 لاکھ ڈالر تھا، جو مالی سال 2019 میں 34 کروڑ 20 لاکھ 80 ہزار ڈالر اورمالی سال 2020 میں 44 کروڑ 61 لاکھ 80 ہزار ڈالر تک جا پہنچا، لیکن سعودی عرب سے درآمدات میں کمی ہوئی ہے جو کہ مالی سال 2018 میں 3 ارب 21 کروڑ 30 لاکھ ڈالر تھیں اور مالی سال 2020 میں ایک ارب 73 کروڑ 50 لاکھ ڈالر ہوگئیں۔ رپورٹ کے مطابق قطر کے لیے بھی برآمدات میں اضافہ ہوا اور یہ مالی سال2019 میں 3 کروڑ 93 لاکھ 30 ہزار ڈالر سے بڑھ کر مارچ تا جون کے عرصے میں 5 کروڑ ایک لاکھ 30 ہزار ڈالر ہوگئیں،گزشتہ کچھ سال کے دوران قطر کے ساتھ پاکستان کی تجارت میں اضافہ ہوا ہے اور مالی سال 2020 میں قطر کے لیے برآمدات میں 36 فیصد اضافہ ہوا،وزارت تجارت کے مطابق کرونا وائرس کے باوجود پاکستان کی قطر کے لیے برآمدات میں فروری سے جون تک اضافہ دیکھنے میں آیا اور صرف جون کے دوران یہ 40 فیصد بڑھ گئیں۔ قطر نے 2012 میں غیر معیاری چاولوں کی کنسائنمنٹ بھیجے جانے کے بعد پاکستانی چاول پر کئی سال سے لگی پابندی بھی ہٹا دی اور اب تک پاکستان قطر کو 4 ہزار ٹن باسمتی چاول برآمد کرچکا ہے۔