سٹیل ملز کے بعد پی آئی اے بھی فارغ ۔!!قومی ائیر لائن دیوالیہ ہوگئی، ملازمین میں تشویش کی لہر

اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن(پی آئی اے) کو سفری بندش کے باعث ماہانہ11 ارب کا نقصان ہونے لگا، جبکہ کورونا وباء کے دوران پی آئی اے کو تین ماہ میں33 ارب تک نقصان ہوچکا ہے،پی آئی اے نقصانات کی وجوہات میں حج و عمرہ آپریشن نہ ہونا اور کراچی جہاز حادثہ بھی شامل ہے۔ تفصیلات کے مطابق

کورونا وباء کے دوران پی آئی اے پر فضائی حدود کی بندش کے باعث اربوں روپے کا نقصان پہنچ رہا ہے۔سرکاری دستاویزات کے مطابق کورونا وباء کے تین ماہ اپریل تا جون قومی ایئرلائن کے ریونیو کو 30 سے 33 ارب کا نقصان پہنچ چکا ہے۔ جبکہ ماہانہ ریونیو کی مد میں 11 ارب کا نقصان ہورہا ہے۔ پی آئی اے انتظامیہ کا کہنا ہے کہ کورونا سے قبل پی آئی اے بہتری کی جانب گامزن تھی، لیکن کورونا کے دوران خسارے میں اضافہ ہوگیا ہے۔قومی ایئر لائن کے نقصانات کی وجوہات میں حج و عمرہ آپریشن نہ ہونا اور کراچی میں جہاز حادثہ بھی شامل ہے۔بتایا گیا ہے کہ پی آئی اے نے سال2019ء میں 8 سال بعد 7.8 ارب روپے کا منافع کمایا تھا۔2019ء میں 147 ارب روپے سے بھی زیادہ رہا۔ جبکہ 2018ء میں پی آئی اے 19.7 ارب نقصان میں جا رہی تھی۔ جس کے باعث 2018ء میں ریونیو صرف 103 ارب روپے تھا۔ اسی طرح ایک اور رپورٹ میں بتایا گیا کہ قومی ایئر لائنز پی آئی اے کو رواں مالی سال 2020-21ء کے دوران بین الاقوامی پروازوں کے کرائے کی مد میں ایک سو ارب روپے کے خسارے کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔بتایا گیا ہے کہ کورونا وائرس کے پیش نظر کئے گئے لاک ڈاون اور پاکستانی پائلٹوں کی جعلی اسناد کی وجہ سے مختلف ممالک کے لئے پی آئی اے کی پروازوں کی بندش کے باعث اس خسارہ کے بڑھنے کا بھی امکان ہے بتایا گیا ہے کہ یورپی یونین کی جانب سے پی آئی کے کی پروازوں کی بندش سے قومی ایئر لائن کو 37 ارب روپے کاخسارے کا سامنا ہے گزشتہ پانچ ماہ میں عمرہ سیزن کے دوران پروازوں کی بندش سے پی آئی اے کو ساڑھے پانچ ارب روپے کے خسارے کا سامنا کرنا پڑا۔امریکہ کے لئے قومی ایئرلائن کی پروازوں کی بندش سے 28 کروڑ روپے کے خسارے کا سامنا کرنا پڑا۔ اسی طرح پی آئی اے کے فضائی آپریشن کی بندش سے دوبئی کی مد میں بھی اربوں روپے کے خسارے کا امکان ہے یہ بھی بتایا گیا ہے کہ پی آئی اے نے نئی مالی سال کے لئے کرایوں کی مد میں 196 ارب روپے کا ہدف مقرر کر رکھا تھا۔ جس کے مقابلے میں پی آئی اے کو 100 ارب روپے کا خسارے کا سامنا ہے۔