اضافہ نہیں حیران کن کمی : 80 سال بعد دنیا کی کل آبادی میں بڑی کمی کیوں واقع ہو جائے گی ؟ ماہرین نے پیشگوئی کردی

نیویارک (ویب ڈیسک) رواں صدی کے آخر تک دنیا کی آبادی 8.8 بلین ہو گی جو اقوام متحدہ کی پیش گوئی سے دو ارب کم ہے۔ یہ اعداد وشمار ایک بڑے پیمانے پر کروائی جانے والی تحقیق میں سامنے آئے ہیں۔ بین الاقوامی تحقیقی ٹیم نے میڈیکل جریدے ’’دی لانسیٹ‘‘ میں اپنے یہ نتائج شائع کئے ہیں۔

محققین کا کہنا ہے کہ دنیا کے 195 میں سے 183 ممالک میں شرح پیدائش اس قدر کم ہو جائے گی کہ بیرون ملک ہجرت کرنے والے تارکین وطن کے بغیر آبادی کی اس شرح کو برقرار رکھنا مشکل ہو گا۔ اس تحقیق کے مطابق چین‘ جاپان‘ سپین‘ اٹلی اور پولینڈ سمیت 20 سے زیادہ ممالک کی آبادی 2100ء تک کم ہو کر نصف رہ جائے گی۔دوسری جانب ایک اور خبر کے مطابق مریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ہانگ کانگ کی خود مختاری سے متعلق تنازعے میں چین کے خلاف پابندیوں کی منظوری کے قانونی بل پر دستخط کر دیئے ہیں۔ ٹرمپ نے واشنگٹن میں صحافیوں کو بتایا کہ اس اقدام کے بعد چین کو خصوصی انتظامی علاقے ہانگ کانگ میں عوام کے خلاف ’جابرانہ اقدامات‘ کے لئے جواب دہ ہونا پڑے گا۔ یہ امریکی قانون ایسے لوگوں اور اداروں کے خلاف کارروائی کی وجہ بنے گا‘ جو ’ہانگ کانگ کی آزادی ختم کرنا چاہتے ہیں۔ اس قانون کے تحت امریکہ میں ان پابندیوں سے متاثرہ افراد کی املاک منجمد کی جا سکیں گی اور ان کا امریکہ میں داخلہ بھی روکا جا سکے گا۔ صدر ٹرمپ نے یہ بھی کہا کہ یوں ہانگ کانگ کے ساتھ ترجیحی اقتصادی سلوک بھی ختم ہو جائے گا۔ انہوں نے پھر عالمی ادارہ صحت کو چین کا کٹھ پتلی قرار دیدیا۔