پُرانا کورونا فارغ۔۔!! ’ نئی قسم ‘ کا کورونا وائرس تیزی سے پھیلنے لگا، اس کی کیا علامات ہیں؟ ماہرین نے ایک بار پھر خطرے کی گھنٹی بجا دی

نیویارک (نیوز ڈیسک ) نئی قسم کا کرونا وائرس پہلے سے زیادہ تیزی سے پھیل رہا ہے، ایک نئی طبی تحقیقاتی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ایک نئی قسم کا تغیراتی کورونا وائرس پہلے سے زیادہ تیزی سے یورپ سے امریکہ تک پھیل گیا ہے، تاہم خوش قسمتی سے یہ متاثرہ افراد کو بیمار نہیں کر رہا ہے۔

ماہرین نے بتایا ہے کہ دنیا بھر کو اپنی لپیٹ میں لینے والی وبا کا سبب بننے والا موجودہ کورونا وائرس اصل کورونا وائرس سے تین سے چھ گنا زیادہ تیز رفتاری سے پھیلتا ہے، جو ووہان سے پھیلنا شروع ہوا تھا۔امریکی ریاست نارتھ کیرولینا کی ڈیوک یونیورسٹی کے محققین نے انکشاف کیا ہے کہ اس بات کے واضح ثبوت ملے ہیں کہ کورونا وائرس کی ایک اور نئی قسم سامنے آئی ہے جو یورپ سے امریکہ تک پھیل گئی ہے اور مزید تیزی سے پھیلتی جارہی ہے۔رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ کورواؤنا کی تبدیل شدہ شکل جو اس وقت دنیا کے لاتعداد انسانوں کو اپنی لپیٹ میں لے چکی ہے، اس وبا سے کہیں زیادہ شدید اور مہلک ہے جس کا پھیلاؤ چین سے شروع ہوا تھا۔محققین کے مطابق تحقیقاتی مطالعے میں اس بات کا انکشاف بھی ہوا ہے کہ نئی قسم کے تغیراتی کورونا وائرس سے لوگوں میں انفیکشن کا امکان پڑھتا جارہا ہے لیکن اس کے حملے سے متاثرہ شخص زیادہ بیمار نہیں ہورہے۔ تحقیق کے نتجے میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ کورونا وائرس کا یہ تبدیل شدہ ورژن زیادہ عام ہے اور یہ دوسرے ورژن کے مقابلے میں زیادہ متعدی ہے۔سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ان کے پاس ابھی تک اس بات کا کوئی ثبوت نہیں ہے کہ وائرس کی یہ نئی قسم کسی مریض کی حالت کو مزید خراب کرنے کا باعث بن رہی ہے یا نہیں لیکن ایسا ضرور لگ رہا ہے کہ اس وائرس میں قوت مزاحمت زیادہ ہے اور یہ اپنے اثرات کو دہرانے کی کہیں زیادہ صلاحیت رکھتا ہے اور اس میں منتقلی کی صلاحیت بھی زیادہ ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ ان سب امکانات کی تصدیق کی فی الحال کوششیں کی جا رہی ہیں۔