’’ آپ ایک ایسا چینل بنا سکتی ہیں جس میں سارے صحافی ایماندار ہوں اور۔۔‘‘ سینئر صحافی کی عمران حکومت پر تنقید، اینکر عمران ریاض خان نے لائیو پروگرام میں ایسا سوال پوچھ لیا کہ سب خاموش ہوگئے

اسلام آباد( نیوز ڈیسک) سینئر اینکر پرسن عمران ریاض خان کا کہنا ہے کہ ابھی عمران خان کو آئے ہوئے صرف دو سال ہی ہوئے ہیں، اس بندہ پر چڑھائی کرنا زی ادتی ہے، ہاتھ پاؤں باندھ کر اور پھنسا کر حکومت عمران خان کے حوالے کر دی گئی لیکن انکی ہمت کی داد دینی

پڑے گی کیونکہ وہ ابھی ہار نہیں مان رہے۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں سینئر صحافیوں کی عمران خان اور حکومتی پالیسیوں پر تنقید ، اینکر پرسن عمران ریاض خان نے صحافیوں کو اصلیت بتا دی ، بات کرتے ہوئے عمران ریاض خان کا کہنا تھا کہ ابھی عمران خان کو آئے ہوئے صرف دو سال ہی ہوئے ہیں، اس بندہ پر چڑھائی کرنا زیادتی ہے، ہاتھ پاؤں باندھ کر اور پھنسا کر حکومت عمران خان کے حوالے کر دی گئی لیکن انکی ہمت کی داد دینی پڑے گی کیونکہ وہ ابھی ہار نہیں مان رہے، ہر پارٹی وزیر اعظم کو بلیک میل کر رہی ہے۔ عمران ریاض خا کی جانب سے پروگرام کی ہوسٹ سے سوال کیا گیا کہ کیا آپ سب لوگ مل کر کوئی ایسا چینل بنا سکتے ہیں جس میں ہر صحافی ایماندر ہو؟ پھر ہم لوگ عمران خان سے یہ تقاضہ کیوں کر رہے ہیں کہ وہ ایک ملک بنائیں جس میں سب کچھ ٹھیک ہو، قائدِ اعظم نے بھی پاکستان بننے کے بعد یہ مثال دی تھی کہ میری جیب میں کھوٹے سکے ہیں اور کھوٹے سکوں کو چلانا پڑتا ہے، اس لیے آپ کو سارے ہی لوگ ایماندار اور نیک نہیں مل سکتے، اقتدار چلانے کے لیے ہر طرح کے بندے کا سہارا لینا پڑتا ہے، جیسا نظام ہوگا ویسے ہی لوگ لینے پڑے گے، ارب پتی لوگ ہیں پھر بھی سرکاری تحائف لے کر گھر جاتے رہے، نواز شریف نے وعدہ کیا کہ وہ واپس آئیں گئے لیکن نہیں آئےے پھر عمران خان پر ہی ساری تنقید کیوں؟