پوری دنیا کے لیے بڑی خوشخبری؛ اٹلی نے کرونا ویکسین تیار کر لی ، کب تک مارکیٹ میں آ جائے گی؟ جانیے

روم (ویب ڈیسک ) اٹلی میں کرونا ویکسین کی تیاری کے سلسلے میں پیش رفت ہوئی ہے، ایک امریکی کمپنی نے دوا ساز کمپنی کے ساتھ ویکسین کی تیاری میں مدد کے لیے اشتراک کر لیا ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق اٹلی میں واقع امریکی گروپ کیٹالینٹ (Catalent) کے ایک پروڈکشن

پلانٹ نے کو وِڈ 19 کے لیے ویکسین کی تیاری کے سلسلے میں مدد دینے کے لیے دوا ساز کمپنی جانسن اینڈ جانسن (J&J) کے ساتھ اشتراک کیا ہے۔پیر کو اٹلی کے وزیر صحت رابرٹو سپیرانزا نے روم سے 70 کلومیٹر کے فاصلے پر موجود قصبے اناگنی میں واقع پلانٹ کا دورہ کرتے ہوئے کہا کہ جس ویکسین پر جانسن اینڈ جانسن کام کر رہی ہے، وہ یہیں اس پلانٹ پر مکمل ہوگی۔اٹلی میں ممکنہ ویکسین تیار کرنے کا یہ منصوبہ دونوں امریکی کمپنیوں کے مابین موجود معاہدے کی توسیع ہے، واضح رہے کہ اپریل میں امریکی کمپنی کیٹالینٹ نے جے اینڈ جے کے ساتھ ایک معاہدہ کیا تھا جس کے تحت ویکسین کی شیشی کی بھرائی اور اس کی پیکیجنگ سروسز امریکی ریاست انڈیانا کے شہر بلومنگٹن میں واقع پلانٹ میں ہونی تھی۔اٹلی کے وزیر صحت نے کہا ہے کہ اب ویکسین کی تیاری کا پورا عمل اٹلی ہی میں ہوگا۔امریکی گروپ کیٹالینٹ، آسٹرا زینیکا (برطانوی سویڈش فارماسیوٹیکل کمپنی) کے لیے بھی کرونا ویکسین کے سلسلے میں شیشی بھرائی اور فنشنگ کی خدمات فراہم کر رہا ہے، یہ گروپ وبا کے دوران ویکسین کے کروڑوں ڈوز کی تیاری کے مراحل میں اپنی خدمات فراہم کرے گا۔دوسری جانب پاکستان نے جوڑوں کے درد میں استعمال ہونے والے انجیکشن ایکٹمرا کے کورونا کے مریضوں پر مثبت اثرات سامنے آگئے۔ایکٹمرا انجیکشن کا ٹرائل لاہور کے جنرل ہسپتال میں 54 مریضوں پر کیا گیا۔ ڈاکٹرز نے مریضوں کو ایکٹمرا کے 2، 2 انجیکشن لگائے جس کے بعد 75 فیصد مریض 10 روز کے اندر اندر ٹھیک ہوگئے۔اس تجربے کے دوران 7 مریضوں کی اموات بھی ہوئی ہیں لیکن یہ وہ مریض تھے جو پہلے سے ہی گردوں اور شوگر کی بیماریوں میں مبتلا تھے۔ ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ صرف ایکٹمرا لگانے سے فائدہ نہیں ہوتا کیونکہ یہ گردوں کو نقصان پہنچاتا ہے اور دیگر انفیکشنز کا خطرہ بھی بڑھاتا ہے، اس کے ساتھ دیگر ادویات بھی دینی پڑتی ہیں۔