بریکنگ نیوز: اثاثہ جات میں غلط بیانی۔!!! خسرو بختیار کی نااہلی کیلئے بڑا اقدام۔۔۔ وفاقی وزیر کے اصل اثاثے 20کروڑ کی بجائےکتنےنکلے؟ دھماکہ خیز انکشاف

اسلام آباد (ویب ڈیسک) اثاثہ جات میں غلط بیانی، خسرو بختیار کی نا اہلی کیلئے بڑا اقدام اٹھا لیا گیا، وفاقی وزیر اقتصادی امور خسرو بختیار کی نا اہلی کے لیے الیکشن کمیشن میں درخواست دائر کر دی گئی، درخواست محمد احسن ایڈووکیٹ کی جانب سے دائر کی گئی ہے۔

درخواست گزار کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا ہے کہ خسرو بختیار نے اثاثہ جات میں غلط بیانی کی ، خسر وبختیار نے 2018ء میں اپنے اثاثے 20 کروڑ کے ظاہر کیے،درخواست میں الزام عاید کیاگیاہے کہ خسرو بختیار نیب کے مطابق 100 ارب کے اثاثے رکھتے ہیں ،خسرو بختیار نے کاغذات نامزدگی اوراثاثہ جات میں غلط بیانی کی۔درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان غلط بیانی پر وفاقی وزیر کو نااہل قرار دے۔ ایک پر اسرار پیشرفت میں چیئر مین نیب نے وفاقی وزیر فوڈ سکیورٹی خسرو بختیار اور ان کے بھائی کیخلاف انکوائری ملتان سے لاہور دفتر منتقل کر دی ہے۔ جس سے اس کی قیمت پر سوالات کھڑے ہوئے ہیں جسیا کہ یہ نیب ملتان ہی تھا جس نے شکایت پر کارروائی کرتے ہوئے خسرو بختیار کے اربوں کے اثاثوں کا سراغ لگا تھا۔ اس معاملے میں شکایت کنندہ کو اس منتقلی کی وجہ نہیں بتائی گئی ہے جو اس حقیقت کے باوجود کی گئی ہے کہ یہ ملتان کے علاقائی دائرہ اختیار میں تھی۔ باخبر حکام کے مطابق یہ منتقلی نیب ملتان کی رضامندی کے بغیر کی گئی ہے جو اس معاملے کا بھرپور انداز میں تعاقب کرنا چاہتا تھا کہ وزیر کے بھائیوں کے اثاثے کس طرح اربوں روپوں تک بڑھ گئے ہیں۔