کپتان چھا گیا۔۔۔!!!پاکستان میں میڈیکل آلات بنانے کی صنعت کا آغاز، کتنے کھربوں روپے کی بچت ہونے لگ گئی ؟ جان کر آپ بھی نئے پاکستان کا نعرہ لگا دیں گے

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہا ہے کہ پاکستان میں میڈیکل آلات بنانے کی صنعت کا آغاز ہوگیا، اگلے تین سالوں میں پاکستان کی ایک بلین ڈالر کی امپورٹ بچائیں گے، جبکہ آئندہ پانچ سال بعد پاکستان کو بیرونی دنیا سے کوئی میڈیکل آلات نہیں منگوانا پڑے گا

انہوں نے مائیکروبلاگنگ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ پاکستان نے وینٹی لیٹر کا پہلا بیج این ڈی ایم اے کے حوالے کیا ہےاصل میں پاکستان انجینئر نگ کونسل کو 57 ڈیزائن ملے تھے، جن میں چار ڈیزائن کو فائنل کیا گیا۔ یہ این آر ٹی سی میں پہلی کمرشل مینو فیکچرنگ تھی، یہ پہلا بیج حوالے کردیا گیا ہے۔اس کے علاوہ مزید تین مینو فیکچرنگ سہولیات ہیں، دو نجی سیکٹر اور ایک سرکاری سیکٹر میں ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان 2.1 بلین ڈالر کی طبی سامان ہر سال برآمد کرتا ہے۔ ایک بلین ڈالر کا ہم کمپنی کے ساتھ اس طبی سامان کو چلانے کیلئے سروس معاہدہ کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس سے پاکستان میں میڈیکل آلات بنانے کی صنعت کا آغاز ہوجائے گا۔ پاکستان کی اگلے تین سالوں میں ہم ایک بلین ڈالر کی امپورٹ بچائیں گے۔ جبکہ آئندہ پانچ سال بعد پاکستان کو بیرونی دنیا سے کوئی بھی میڈیکل آلات یعنی طبی سامان نہیں منگوانا پڑے گا۔ مزید برآں وفاقی وزیر سائنس و ٹیکناکوجی فواد چودھری نے کہا کہ میڈ ان پاکستان کی پہلی 12 وینٹیلیٹرز کی کھیپ وزیراعظم نے این ڈی ایم اے کے حوالے کر دی۔ٹوئٹر پر اپنے بیان میں فواد چوہدری نے کہاکہ ایک سنگ میل طے ہو گیا ، میڈ ان پاکستان کی پہلی 12 وینٹیلیٹرز کی کھیپ وزیراعظم نے این ڈی ایم اے کے حوالے کردی۔ فواد چوہدری نے کہاکہ سیف وینٹ کا پہلا بیج وزیر اعظم عمران خان کی جانب سے این ڈی ایم اے کے سپرد کیا گیا۔